بلجیم میںکورونا پابندیوں کیخلاف پر تشدد مظاہرے

برسلز //یورپی ملک بلجیم کے دارالحکومت برسلز میں کورونا وبا پر قابو پانے کے لیے کیے گئے سخت اقدامات کے خلاف مظاہروں میں 8ہزار افراد نے شرکت کی۔ اس موقع پر پولیس نے مظاہرین کے خلاف آنسو گیس کا استعمال کیا، جب کہ مظاہرین کی جانب سے پولیس اہلکاروں پر جلتی ہوئی اشیا اور بوتلیں پھینکی گئیں۔ خبررساں اداروں کے مطابق فرانس اور نیدرلینڈز کے بعد دیگر یورپی ممالک میں بھی ویکسین کی مخالفت عروج پر ہے۔برسلز میں ہونے والے احتجاجی مارچ کے دوران پولیس نے خاردار تارلگا کر مظاہرین کو یورپی یونین کے ہیڈکوارٹرز کی جانب جانے سے روک دیا۔ 2ڈرون طیاروں اور ایک ہیلی کاپٹر کے ذریعے احتجاجی مارچ کی نگرانی کی گئی۔پولیس اورمظاہرین میں جھڑپوں میں پولیس اہلکاروں سمیت کئی افراد زخمی ہوئے۔ پولیس نے مظاہرین کومنتشر کرنے کے لیے تیز دھار پانی اور آنسو گیس کا بے دریغ استعمال کی۔ دوسری جانب آکسفورڈ ایسٹرا زینیکا ویکسین کی شریک موجد کا کہنا ہے کہ آئندہ وبائیں کورونا وائرس سے بھی زیادہ مہلک ہو سکتی ہیں۔ دنیا کو کورونا وبا سے سبق حاصل کرنا چاہیے۔ رچرڈ ڈمبلبی لیکچر میں خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر سارہ گلبرٹ کا کہنا تھا کہ یہ کوئی پہلا یا آخری موقع نہیں کہ جس میں کسی وائرس کے سبب ہماری زندگیاں یا معاشی صورتحال متاثر ہوئی ہو۔ سچ تو یہ ہے کہ اگلی وبائیں اس سے بھی بدتر ہو سکتی ہیں۔ سارہ گلبرٹ کا کہنا تھا کہ ہم ایسی صورتحال کی اجازت نہیں دے سکتے ہیں کہ ہم کورونا کے کٹھن حالات میں سے نکلیں تو اندازہ ہو کہ ہمارے پاس کسی آیندہ وبا سے احتیا ط کی تدابیر اپنانے کے لیے معاشی وسائل نہیں ہیں۔ ویکسین کی موجد کا کہنا تھا کہ ہم نے اس وبا کے مقابلے میں جتنی معلومات اور تجربات حاصل کیے ہیں انہیں ضائع ہونے سے بچانا ناگزیر ہے۔
 
 
 

 کورونا کے 10مریضوں کی موت | اردن میں ہسپتال کے سربراہ کو 3برس قیدکی سزا

السلط // اردن کی عدالت نے اتوار کے روزسلط شہر کے سرکاری ہسپتال کے ڈائریکٹر کو  کویڈ میں مبتلا 10 مریضوں کی موت کا سبب بننے کے الزام میں تین سال قید کی سزا سنائی ہے۔ سرکاری ہسپتال کے ڈائریکٹر عبدالرزاق الخشمان اور ان کے چار معاونین کوان مریضوں کی موت کا سبب بننے کا مجرم قرار دیا گیا تھا۔السلط شہر کے سرکاری ہسپتال میں آکسیجن ختم ہوجانے کے بعد مریضوں کی موت ہوئی تھی۔ ہسپتال میں کورونا وائرس میں مبتلا مریضوں کا علاج کیا جا رہا تھا۔ہسپتال کے ڈائریکٹر اوران کے معاونین کو اس عدالتی فیصلے کے خلاف 10 دن کے اندر اپیل کا حق دیا گیا ہے۔مارچ 2021 میں کورونا کے باعث ہونے والی ان اموات پر اردن کے عوام میں غم وغصے کی لہر دوڑ گئی تھی اور یہ عوامی ردعمل وزیر صحت  نذیر عبیدات کے استعفیٰ کا باعث بھی بنا۔واضح رہے کہ ہسپتال میں گیس کی سپلائی میں تعطل کے باعث ہونے والی ہلاکتوں کی خبر پھیلتے ہی عمان کے شمال مغرب میں واقع الحسین السلط  نیو ہسپتال کے باہر سینکڑوں مشتعل مظاہرین جمع ہو گئے تھے۔بعدازاں اردن کے شاہ عبداللہ الثانی نے ہسپتال کا دورہ کیا تھا اور ہسپتال کے قریب پہنچتے ہی وہاں موجود مظاہرین نے ان کی گاڑی کو گرد جمع ہونا شروع کر دیا تھا۔