برفباری کے نتیجے میں شہر کی بیشتر رابطہ سڑکیں بند

 سرینگر//وادی کشمیر میںہوئی بھاری برفباری کے نتیجے میں شہر سرینگر و دیگر اضلاع میں اہم رابطہ سڑکیں ایک تو برف سے ہنوز ڈھکی ہوئی ہیں یا برف کے پانی سے زیر آب آگئی ہیں ۔ سڑکوں سے برف نہ ہٹانے اورپانی کی نکاسی کیلئے بہتر انتظام نہ ہونے کی وجہ سے سڑکیں جھیلوں میں تبدیل ہوکے رہ گئی ہیں جس کی وجہ سے لوگوں کو عبور و مرور میں کافی دشواریاں پیش آرہی ہیں۔ وادی کشمیر میں ہوئی برفباری نے انتظامیہ کے اُن دعوئوںکو فریب اور سراب ثابت کردیا جن میں انتظامیہ بار بار یہ دعویٰ کرتی ہے کہ شہر اور دیگر قصبہ جات میں ڈرنیج سسٹم بہتر بنایا گیا ہے اور بارشوں کے پانی کی نکاسی کیلئے اقدامات کئے گئے ہیں ۔ سرینگر کے لالچوک کی سڑکیں جھیل میں تبدیل ہوکے رہ گئی ہیں۔ لالچوک ، ریگل چوک،مہاراجہ بازار، ریذیڈنسی روڑ، مولانا آزاد روڑ اور دیگر اہم سڑکوں پر برف کا پانی جمع ہونے کی وجہ سے وہاں سے گزرنے والی گاڑیاں جیسے جھیل میں کشتیاں چل رہی تھیں ۔ اگرچہ چند ایک جگہوں پر پانی کی نکاسی کیلئے موٹر لگائے گئے تھے تاہم پانی کے آگے وہ ناکافی تھے۔ ادھر سرینگر کے خانیار چوک میں پانی جمع ہونے سے وہاں سے گزرنے والی گاڑیوں کو کافی مشکلات پیش آرہی تھیں۔ ادھر سرینگر، اننت ناگ شاہراہ پر بھی برف اور پانی جمع ہونے کی وجہ سے سڑکوں سے لوگوں کا عبور و مرور دشوار بن گیا جبکہ سرینگر بارہمولہ شاہراہ پر بھی کئی جگہوں پر کافی پانی جمع ہونے کی وجہ سے وہاں سے گزرنے والی گاڑیوں کو چلنے پھرنے میں دشواریوں کا سامنا کرنا پڑا۔ ادھر سرینگر کے نواحی علاقوں کی مختلف علاقوں کے مکینوں نے بھی بتایا کہ اکثر سڑکیں زیر آب ہیں اور لوگوں کا گھرو ں سے باہر نکلنا دشوار بن گیا ہے ۔سی این آئی