برفباری سے پیداشدہ صورتحال

 سرینگر//نیشنل کانفرنس نے ڈویژنل انتظامیہ سے برفباری اور بارشوں کے نتیجے میں پیدا شدہ صورتحال سے فوری طور پر نمٹنے کی اپیل کی ہے۔ پارٹی کے معاون جنرل سکریٹری ڈاکٹر شیخ مصطفیٰ کمال نے انتظامیہ سے اپیل کی کہ وہ برفباری کے نتیجے میں منقطع ہوئے علاقوں اور دیہات کے ساتھ سڑک روابط بحال کرنے کیلئے جنگی بنیادوں پر کام کریں اور ساتھ ہی شہر سرینگر اور وادی کے دیگر نشیبی علاقوں سے پانی کی نکاسی کیلئے اقدامات اُٹھائے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ گذشتہ سال برفباری نے حکومت اور انتظامیہ کی کے بلند بانگ دعوئوں کی قلعی کھول کر رکھ دی تھی اور کئی دن تک حکومت اور انتظامیہ کی طرف سے عوام کی راحت رسانی کیلئے کوئی بھی اقدام نہیں اٹھایا ۔ ڈاکٹر کمال نے اُمید ظاہر کی کہ امسال انتظامیہ بروقت کارروائی کرکے عوام کی راحت رسانی کیلئے اقدامات اٹھائے گی اوربند ہوئی سڑکوں کو جنگی بنیادوں پر بحال کیا جائے گا۔انہوں نے صوبائی کمشنروں اور ضلع ترقیاتی کمشنروں سے اپیل کی کہ وہ ذاتی طور پر عوام کی راحت رسانی کے اقدامات کی نگرانی کریں اور سرحدی علاقوں میں متعلقہ انتظامیہ اور فیلڈ سٹاف کو متحرک کریں اور ساتھ ہی ان علاقوں میں غذائی اجناس اور ادویات کا وافر سٹاک پہنچایا جائے۔ انہوں نے محکمہ بجلی کے حکام سے بھی اپیل کی کہ وہ جنگی بنیادوں ایسے علاقوں میں بجلی کی مکمل سپلائی بحال کریں جہاں برفباری سے ترسیلی لائینوں کو نقصان پہنچا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کرناہ، مژھل، ٹنگڈار، گریز، سنتھن ،کپرن ، شوپیان، پہلگام ، مروہ ، مڑون اور دھچن جیسے دور دراز علاقوں میں جنگی بنیادوں پر برف ہٹائی جائے کیونکہ ان علاقوں میں رہ رہے لوگوں کو آمد و رفت نہ ہونے کی وجہ سے کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ خصوصی طور پر بیماروں لانے لیجانے میں کافی مشکلات پیش آرہی ہیں۔ اسی دوران پارٹی کی جنوبی زون صدر سکینہ ایتو اور شمالی زون صدر محمد اکبر لون شمالی اور جنوبی کشمیر خصوصاً بالائی علاقاوں میں ہوئی بررفباری سے پیداہ شدہ صورتحال اور عوام کی راحت رسانی کیلئے اقدامات کی اپیل کی ہے اور ایسے علاقوں کی سڑکوں کو جنگی بنیادوں پر بحال کرنے کی مانگ کی ہے جو ابھی تک برفباری سے کٹ گئے ہیں۔