برفباری سے مقطع علاقوں کو فوری بحال کیا جائے :اکبر لون

سرینگر//جموں وکشمیر نیشنل کانفرنس کے رکن پارلیمان برائے شمالی کشمیر ایڈوکیٹ محمد اکبر لون نے اس بات پر زبردست افسوس اور برہمی کا اظہار کیا ہے کہ پہلی شمالی کشمیر کے سرحدی اور دور دراز اعلاقے پہلی برفباری سے لیکر آج تک مکمل وادی سے کٹے ہوئے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ کرناہ ، کیرن، ٹنگڈار، مژھل، گریز، جمہ گنڈ اور دیگر دور دراز علاقوں کی سڑکیں مسلسل بند ہیں اور اس صورتحال سے وہاں قیام پذیر لوگ کو زبردست مشکلات اور مصائب کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مذکورہ علاقوں میں سڑک رابطوں کے بند ہونے سے بیماروں کو زبردست مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہاہے۔ گذشتہ دنوں میں ایسے کئی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئے جن میں بیماروں کو کئی کئی۔ فٹ برف سے کندھوں پر اُٹھا کر ہسپتال پہنچاتے ہوئے دیکھا گیا۔ اس کے علاوہ مذکورہ علاقوں میں پھنسے طلباء و طالبات کو بھی مشکلات کا سامنا ہے۔ ایک طرف سے مختلف امتحانات کی تاریخوں کا اعلان کیا گیا جبکہ دوسری جانب یہ طلباء اپنے اپنے علاقوں پھنسے ہوئے ہیں اور حکام امتحانوں کی تاریخوں کی توسیع کرنے کیلئے بھی تیار نہیں ہے ۔محمد اکبر لون نے اس سلسلے میں ضلع ترقیاتی کمشنر کپوارہ، بارہمولہ اور بانڈی پورہ سے بات کی اور دور دراز اور پہاڑی علاقوں کے سڑک رابطے جنگی بنیادوں پر بحال کرنے کی ہدایت کی۔ انہوں نے ساتھ ہی انتظامیہ پر زور دیا کہ وہ مذکورہ علاقوں میں اشیائے خورد و نوش کے علاوہ ہسپتالوں کیلئے ادویات اور دیگر ضروری ساز و سامان بھی بھیجا جائے۔