برطانیہ میں کشمیریوں کا احتجاج

 سرینگر//برطانیہ میں مقیم کشمیریوں نے ’کامن ویلتھ ڈے‘ کے موقع پر جموں کشمیر اور بھارت کی مختلف جیلوں کے اندر مقید کشمیری سیاسی قیدیوں، خصوصاً فریڈم پارٹی سربراہ شبیر احمد شاہ کی رہائی کے حق میں زور دار مظاہرہ کیا ۔قابل ذکر ہے کہ ہر سال12 مارچ کو ملکہ¿ برطانیہ، اپنے ملک میں موجود دنیا بھر کے سفارتکاروں، پارلیمانی ممبران اور دیگر اہم شخصیات کو عشائیہ پر بھلا کر اُن کے ساتھ میٹنگ کرتی ہیں۔ اس سال حکومت برطانیہ نے صرف چھ کشمیریوں کو اُس اندرونی دروازے پر مظاہرے کی اجازت دی تھی جہاں سے سبھی مہمانوں اور ملکہ¿ برطانیہ کا گذر ہوتا ہے۔مظاہرین نے ہاتھوں میں پلے کارڈ اور بینر اُٹھارکے تھے جن میں مختلف قسم کے نعرے درج تھے جیسے ”کشمیریوں کا قتل عام بند کرو“،”ہم کیا چاہتے ،آزادی“ اور ”شبیر شا ہ کو رہا کرو“ وغیرہشامل ہیں۔مظاہرے کے اختتام پر مظاہرین کے نمائندے ارشاد ملک نے کہا ”دولت مشترکہ کے سبھی ارکان،خصوصاً برطانیہ پر یہ ذمہ داری عاید ہوتی ہے کہ وہ مسئلہ کشمیر کا حل فی الفور ڈھونڈیں جہاں روزانہ نوجوانوں کو قتل کیا جاتا ہے“۔