برآمد کنند گان فری ٹریڈ ایگریمنٹ سے فائدہ اُٹھاکرعالمی منڈیوں میں برآمدات کیلئے آپشنز تلاش کریں نوئیڈا ایس اِی زیڈ اور جے کے ٹی پی او کا جموںوکشمیر سے برآمدات بڑھانے کیلئے فر ی ٹریڈ ایگریمنٹ کے مواقع پر سیشن کا اِنعقاد

جموں// جموںوکشمیر ٹریڈ پروموشن آرگنائزیشن ( جے کے ٹی پی او )نے نوئیڈا سپیشل اِکنامک زون ( این ایس اِی زیڈ)کے ساتھ مل کر صنعت بھون جموں میں ایک روزہ ورکشا پ کا اِنعقاد کیا جو جموں وکشمیریوٹی کے نئے اور موجودہ برآمد کنند گان کے لئے آسٹریلیا اور متحدہ عرب امارات کے ساتھ تجارتی معاہدوں اور خصوصی اِقتصادی زونوںکے فوائد پرہے۔منیجنگ ڈائریکٹر جموںوکشمیر ٹریڈ پروموشن آرگنائزیشن خالد جہانگیر نے ورکشاپ کے سیاق و سباق کو ترتیب دیتے ہوئے کہا ،’’ جموںوکشمیر اَپنے متنوع اعلیٰ حجم ، مخصوص مصنوعات کے پیش نظرکے لئے بہترین یوٹیز میں سے ایک ہونے کی صلاحیت رکھتا ہے اور آسٹریلیا اور متحدہ عرب امارات کے ساتھ فری ٹریڈ ایگریمنٹ سے ہمارے برآمد کنندگان کو ان ممالک تک اَپنی تجارت کو بڑھانے کا موقعہ ملے گا۔‘‘اُنہوں نے برآمدات کو بڑھانے میں ایس اِی زیڈ کے کردار پر روشنی ڈالتے ہوئے ایس اِی زیڈ فوائد جیسے جی ایس ٹی سے چھوٹ ، کسٹم ڈیوٹی سے چھوٹی ، کام میں آسانی ، عالمی معیار کے بنیادی ڈھانچے کی دستیابی وغیرہ پرروشنی ڈالی ۔اُنہوں نے کہاکہ اِنڈیا نے آسٹریلیا اور متحدہ عرب اَمارات کے ساتھ ایک فری ٹریڈ ایگریمنٹ پر دستخط کئے ہیں جو تجارتی رُکاوٹوں کو کم کرے گا اور برآمد کنند گان کو اَپنی مارکیٹ میں زیادہ آسانی سے داخل ہونے اور مقابلہ کرنے کی اِجازت دے گا۔اُنہوں نے ایکسپورٹ کے فروغ میں جے کے ٹی پی او کے کردار پر بھی روشنی ڈالی ۔جے کے ٹی پی او نے متعدد ضلعی سطح کی ایکسپورٹ بیداری ورکشاپوں کا اِنعقاد کیا ہے ، بین الاقوامی نمائشوں اور بی ٹی بی ایونٹوں میں حصہ لیا اور بائیر ۔سیلر میٹ کی ہیں۔اِس برس جے کے ٹی پی او کی جانب سے ایونٹوں کی تعداد میں اِضافہ ہوگا جس سے جموںوکشمیر یوٹی کے برآمد کنندگان کی ایک بڑی تعداد کو زیا دہ سے زیادہ مواقع ملیں گے۔ڈیولپمنٹ کمشنر نوئیڈا سپیشل اِکنامک زون اے بپن مینن نے کہا،’’ جموںوکشمیر میں برآمدات کے لحاظ سے بڑھنے کی بہت بڑی صلاحیت ہے کیوں کہ کچھ مصنوعات جیسے زعفران ، سیب ، باسمتی چاول ، چمڑا اور فارما مصنوعات وغیرہ کی دُنیا بھر میں بہت زیادہ مانگ ہے اور جموںوکشمیر ان مصنوعات کا ایک سرکردہ پروڈیوسر ہے۔ برآمد کنند گان کو چاہیے کہ وہ فری ٹریڈ ایگریمنٹ سے فائدہ اُٹھائیں اور اِن منڈیوں میں برآمدات کے لئے آپشنز تلاش کریں۔اُنہوںنے کہا کہ کسٹم سے کلیئر نس کو یقینی بنانے کے لئے ڈی جی ایف ٹی اور ایف آئی اِی او سے سر ٹیفکیٹ اور ریژن حاصل کرنا ضروری ہے۔جوائنٹ ڈیولپمنٹ کمشنر نوئیڈ ا سپیشل اِکنامک زون سریندر ملک نے برآمد کنند گان کو سپیشل اِکنامک زون سے کام کرنے کے فوائد کے بارے میں بتایا جو نہ صرف حکومت کی میک اِن اِنڈیا سکیم کو تقویت فراہم کرتا ہے بلکہ مسابقتی سطح پر خام مال اور اِنٹر میڈیٹس کا ایک مؤثر متبادل بھی فراہم کرتا ہے ۔ اُنہوں نے خدمات اور تجارتی سامان کی برآمد دونوں محاذوں پر نوئیڈا ایس اِی زیڈ کی کامیابی کی داستان بھی شیئر کی۔ اُنہوں نے یہ بھی کہا،’’اِنڈیا ایس اِی زیڈ کے فریم ورک کو نئے سرے سے بنانے کے لئے تیار ہے تاکہ کاروبار کی ایک وسیع رینج موجود ہو اور غیر ملکی سرمایہ کاری کو راغب کرنے اور برآمدات کو فروغ دینے کے لئے آسانی سے اخراج کی اجازت دی جا سکے۔‘‘ڈپٹی ڈائریکٹر ڈی جی ایف ٹی جموں اے کے بھوشن نے شرکاء کو برآمدات کے فروغ کے لئے مختلف سرکاری سکیموں کے بارے میں بتایا۔نوئیڈا ایس ای زیڈ کے افسران نے شراکت داروں کی بحث وتمحیص کے دوران برآمد کنند گان کے سوالات کو حل کیا۔اِس ورکشاپ میں ڈائریکٹر ایچ اینڈ ایچ جموں ڈاکٹر ویکا گپتا اور منیجنگ ڈائریکٹر جے کے ایچ اینڈ ایچ کارپوریشن جموں اَتل شرما بھی موجود تھے۔ ورکشاپ میں 100 کے قریب برآمد اور ممکنہ برآمد کنند گان نے شرکت کی۔