بجلی کی نجکاری نہیں ہونے دیں گے | پلوامہ اوراونتی پورہ میں محکمہ کے ملازمین کا احتجاج

پلوامہ//پلوامہ میں محکمہ بجلی سے وابستہ افراد نے تین گھنٹے کام چھوڑ ہڑتال کر کے احتجاج مظاہرے کئے۔ احتجاجی ملازمین نے کہا کہ سرکار بجلی محکمہ کی نجکاری کررہی ہے جو انہیں کسی بھی صورت میں منظور نہیں ہے۔ احتجاج میں شامل ڈیلی ویجروں اور کیجول لیبروں نے الزام عائد کیا کہ اُن سے کام لیا جا رہا ہے مگر انہیںمستقل نہیں کیا جارہاہے جس کی وجہ سے وہ ذہنی پریشانی میں مبتلا ہیں۔ پلوامہ میں محکمہ بجلی سے وابستہ افراد نے تین گھنٹے کام چھوڑ ہڑتال کر کے زور دار احتجاج مظاہرے کئے۔ انہوں نے کہا کہ سرکار بجلی محکمہ کی نجکاری کررہی ہے۔ احتجاج میں شامل بجلی ملازمین ڈیلی ویجروں اور کیجول لیبروں نے کہا کہ وہ یہ فیصلہ کسی بھی صورت میں منظور نہیں کریںگے۔ انہوں نے کہا کہ وہ جان دیں گے مگر بجلی کی نجکاری نہیں ہونے دیں گے۔ ادھر اس موقع پر پاور ایمپلائز کارڈی نیشن کمیٹی کے صدر میر امتیاز راجپوری نے کہا کہ پلوامہ میں پاور ایمپلائز کارڈی نیشن کمیٹی کے بینرتلے احتجاج کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ اس احتجاج ریلی میں ڈیلی ویجروں اور کیجول لیبروں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ انہوںنے میڈیا کے ساتھ بات کر تے ہوئے کہا ’’ سرکار بجلی محکمہ کی نجکاری کر رہا ہے۔ جو ہمیں کسی بھی صورت میںمنظور نہیں ہے‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ آج ملازمین نے تین گھنٹے کام چھوڑ ہڑتال کیا اور سرکار سے مطالبہ کیا کہ بجلی محکمہ کی نجکاری نہ کی جائے‘‘۔کارڈی نیشن کمیٹی کے صدر امتیاز راجپوری نے مزید کہا کہ محکمہ کی نجکاری ہی نہیں بلکہ کئی اور معاملات ہیں جن کیلئے وہ سرکار سے دردمندانہ اپیل کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ڈیلی ویجروں اور کیجول لیبروں کو مستقل کرنے کا مطالبہ ایک دیرینہ مسئلہ ہے جس پر فوری توجہ کی ضرورت ہے ۔صدر موصوف نے سرکار سے مطالبہ کیا کہ بجلی محکمہ سے وابستہ تمام ملازمین کو پنشن کے دائرے میں لایا جائے۔ احتجاج میں شامل ڈیلی ویجروں اور کیجول لیبروں نے ہا تھو ں میں پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جن پر بجلی کی نجکاری کے خلاف نعرے درج تھی۔