بجلی کی عدم دستیابی: اننت ناگ اور کولگام میں محکمہ بجلی کے خلاف احتجاج

 اننت ناگ+گاندربل // براکہ پورہ ، سرنل ، اچھ بل اننت ناگ اور کولگام ، وچی کے لوگوں نے منگل کو محکمہ بجلی کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے الزام عائد کیا ہے کہ انہیں شیڈول کے مطابق بجلی فراہم نہیں کی جا رہی ہے اور صافین صبح و شام بجلی کی عدم دستیابی کے نتیجے میں گونا گوں مشکلات کا سامنا کرتے ہیں ۔منگل کی صبح مقامی لوگوں نے درگپورہ میں قائم گرڈ سٹیشن کے باہر دھرنا دیا اور محکمہ بجلی کے خلاف جم کر نعرے بازی کی ۔مظاہرین نے کہا کہ انہوں نے کئی بار محکمہ کے حکام کو بجلی کی عدم دستیابی کے بارے میں آگاہ کرتے ہوئے انہیں علاقے کو معقول بجلی سپلائی فراہم کرنے کا مطالبہ کیا مگر محکمہ اس جانب کوئی دھیان نہیں دے رہا ہے اور لوگوں کو حالات کے رحم وکرم پر چھوڑا گیا ہے ۔احتجاج میں شدت کو دیکھتے ہوئے مقامی ایس ایچ او نے گرڈ سٹیشن پہنچ کر مظاہرین کو یقین دلایا کہ اُن کے مطالبات کو اعلیٰ حکام تک پہنچایا جائے گا جس کے بعد احتجاجی مظاہرین پرامن طور اپنے اپنے گھروں کو لوٹ گئے ۔لوگوں کا کہنا تھا کہ اگر محکمہ بجلی علاقے کی جانب دھیان نہیں دے گا تو لوگ سڑکوں پر آنے کیلئے مجبور ہو جائیں گے ۔ادھرگاندربل کے لگ بھگ پچاس سے زائد علاقوں میں نصب بجلی ٹرانسفارمر کئی ہفتوں سے خراب ہیں اورمحکمہ بجلی کے ورکشاپ میں پڑے ہوئے ہیں۔ ان علاقوں میں بجلی کی عدم دستیابی پر مقامی آبادی نے برہمی کا اظہار کیا ہے۔ان ٹرانسفارمر ں میں سے زبین اندرون کا 63 کلو واٹ 20 روز سے خراب ہے جبکہ مقدم محلہ چھترگل کا 63 کلو واٹ پندرہ روزجبکہ بسرہ بگ 18 روز سے ٹرانسفارمر کی عدم موجودگی کے باعث گھپ اندھیرے میں ہے۔جو ٹرانسفارمر خراب ہوکر ورکشاپ میں پڑے ہوئے ہیں ان میں 100 کلو واٹ کے 29 ٹرانسفارمر،250 کلو واٹ کے 6جبکہ 63 کلوواٹ کے 16 ٹرانسفارمر شامل ہیں جن میں سے کئی ٹرانسفارمر 20 روز سے خراب ہوکر ورکشاپ میں پڑے ہیں۔ محکمہ بجلی کے حکام نے تصدیق کی کہ 50 ٹرانسفارمرخراب ہیں تاہم اُن کی کوشش ہے کہ جلدازجلد ٹرانسفارمروں کو ٹھیک کرکے اپنے اپنے علاقوں میں نصب کیا جائے۔