بانڈی پورہ کا گائوں ویئون

سری نگر// شمالی کشمیر کے ضلع بانڈی پورہ کا ایک دور افتادہ گاؤں ویئون ملک کا پہلا گاؤں بن گیا ہے جس کی 15 برس اور اس سے زیادہ عمر کی پوری آبادی کو کورونا ویکسین لگا دیئے گئے ہیں۔اپنے ضلع صدر مقام سے 28 کلومیٹر دور مشہور ہرمکھ چوٹیوں کے دامن میں واقع ووین تک پہنچنے کے لئے طبی عملے کے اہلکاروں کو قریب چودہ کلو میٹر کی مسافت پیدل طے کرنا پڑی تاکہ کم عمر نوجوان لڑکے لڑکیوں کی ویکسینیشن کو ممکن بنایا جا سکے ۔ووین 170 کنبوں پر مشتمل گاؤں ہے جہاں گجر برادری کے لوگ آباد ہیں اور اس گاؤں میں ابھی بھی قریب چار فٹ برف جمع ہے ۔بلاک میڈیکل آفیسر بانڈی پورہ ڈاکٹر مسرت اقبال نے کہا کہ اس گاؤں کا اپنے ضلع صدر مقام کے ساتھ کوئی سڑک رابطہ نہیں ہے اور نہ کمیونکیشن کا کوئی بندوبست ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہمیں بانڈی پورہ سے ایک طبی ٹیم کو روانہ کرنا پڑا جس نے وہاں 56 نوجوانوں کو ویکسین لگائے ۔موصوف افسر نے کہا کہ طبی عملے کو وہاں پیدل جانا پڑا اور انہوں نے تین دن گاؤں میں ہی قیام کرکے صد فیصد نوجوانوں کی ویکیسنیشن کو ممکن بنا دیا۔انہوں نے کہا کہ اس گاؤں میں ابھی بھی قریب چار فٹ برف جمع ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ اس گاؤں کی کل آبادی 362 نفوس پر مشتمل ہے اور سال 2021 میں ہی اٹھارہ سال کی عمر سے اوپر کی آبادی کو ویکسین لگا دئے گئے ہیں۔ڈاکٹر مسرت اقبال نے کہا کہ ہیلتھ اہلکاروں نے ویکیسن کے علاوہ اس بستی کے لوگوں کے کورونا ٹیسٹ بھی کئے ۔انہوں نے کہا کہ اس گاؤں کے ایک فرد کا بھی کورونا ٹیسٹ مثبت نہیں آیا۔قابل ذکر ہے کہ محکمہ صحت کے عہدیداروں کے مطابق جموں وکشمیر ملک کی ریاستوں اور یونین ٹریٹریوں میں لوگوں کی ویکیسنیشن کرانے میں صف اول میں ہے ۔