بانڈی پورہ میں محکمہ بجلی کیخلاف احتجاج

بانڈی پورہ// کڈور،ا سملر، ارن، درد پورہ اورچونٹی مولہ علاقوں کے سینکڑوں لوگوں نے ضلع ترقیاتی کمشنر دفتر کے سامنے بجلی بحران اور اضافی بجلی بلوں کے خلاف احتجاج کیا اور محکمہ بجلی کے خلاف نعرہ بازی کی۔ احتجاجی لوگوں نے پندرہ کلومیٹر فاصلہ طے کر کے ڈپٹی کمشنر دفتر پہنچ کر احتجاج کرتے ہوئے بجلی کی اضافی بلوں کوواپس لینے اور سپلائی میں معقولیت لانے کا مطالبہ کیا۔ احتجاجی مظاہرین نے بتایا کہ دور دراز علاقوں میں بجلی کی آنکھ مچولی سے لوگوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ تاہے۔ ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر بانڈی پورہ ظہور احمد میر کی ہدایت پر اے سی آر بانڈی پورہ ریاض احمد بیگ نے مظاہرین سے بات کرتے ہوئے ایک ٹیم روانہ کرنے کی۔
 
 

چرارشریف میںبجلی نظام درہم برہم 

سرینگر//چرارشریف قصبہ اورآس پاس کے قریب20 دیہات میں بجلی سپلائی کی عدم دستیابی ک وجہ سے عوام کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑٹا ہے۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ حال ہی میں اعلان کئے گئے شیڈول میں حد سے زیادہ کٹوتی کی جاتی ہے اور بجلی سپلائی میں بار بارخلل پیدا کرکے صارفین کو پریشان کیا جاتا ہے۔ علمدار ٹریڈرس یونین کے ایک عہدیدار غلام نبی نے کہا کہ دکانداروں سے اب کئی گنا زیادہ فیس وصول کیاجارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بجلی کی کمی کے دوران فیس میں کمی کی جانی چاہئے تھی لیکن بجلی محکمہ نے سپلائی میں باضابطہ سدھار لانے کے بجائے اضافی بلیں ارسال کیں۔لوگوں کا کہنا ہے کہ اگر صورتحال یہی رہی تو وہ احتجاجی راستہ اختیار کرنے کیلئے مجبور ہوجائیں گے۔