بالاکوٹ میں ایمر جنسی ہسپتال تعمیر کرنے کی مانگ

مینڈھر //مینڈھر کی سرحدی تحصیل بالا کوٹ کے مکینوں نے جموں وکشمیر انتظامیہ سے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ سرحدی تحصیل میں بنیادی سہولیات فراہم کرنے کےلئے جلدازجلد ایک ایمر جنسی ہسپتال قائم کیا جائے تاکہ لوگوں کو مشکل وقت میں در بدر کی ٹھو کریں کھانا نہ پڑیں ۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ بالاکوٹ میں ایمر جنسی ہسپتال کی تعمیر کے ساتھ ساتھ ویٹرنری ہسپتال اور بلٹ بروف ایمبو لینس کی فراہمی کےلئے گزشتہ کئی برسوں سے مانگ کی جارہی ہے لیکن ابھی تک اس سلسلہ میں کوئی عملی قدم نہیں اٹھایا گیا ہے ۔غور طلب ہے کہ مینڈھر سب ڈویژن کی بالاکوٹ تحصیل دونوں ممالک کی افواج کے مابین ہونے والی شدید گولہ بھاری میں سب سے زیادہ متاثر ہو ئی ہے تاہم مقامی لوگوں نے رواں برس کے فروری ماہ میں دونوں ممالک کے درمیان ہونے والے سیز فائر کے بعد کچھ حد تک چین کی سانس لی ہے تاہم علاقہ میں کوئی ایمر جنسی طبی مرکز نہ ہونے کی وجہ سے مقامی لوگوں کو فائرنگ کے دوران زخمی ہونے والے افراد کے علاج معالجہ کےلئے کئی طرح کے مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔مکینوں نے بتایا کہ زخمیوں کو کئی گھنٹوں تک ہسپتال منتقل نہیں کیاجاسکتا جبکہ اسی طرح زخمی مویشیوں کے علاج معالجہ کا بھی کوئی بندوبست نہیں ہے ۔مقامی لوگوں نے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ علاقہ میں جلداز جلد ایمر جنسی ہسپتال قائم کرنے کےساتھ ساتھ ویٹرنری سنٹر اور بلٹ بروف ایمبو لینس فراہم کی جائے ۔