بازو پر سیاہ پٹی باندھ کر میچ کھیلنا ’ذاتی ماتم‘ تھا :عثمان خواجہ

یواین آئی

 

پرتھ// آسٹریلیا کے بلے باز عثمان خواجہ نے بازو پر سیاہ پٹی باندھ کر میچ کھیلنے پر وضاحت دیتے ہوئے کہا کہ یہ سیاسی پیغام نہیں بلکہ ’ذاتی سوگ‘ تھا اور وہ اس حوالے سے انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) کے فیصلے کو چیلنج کریں گے۔پاکستان کے خلاف پرتھ ٹیسٹ کے دوران فلسطینیوں سے اظہار یکجہتی کے لیے سیاہ پٹی باندھ کر میچ میں شرکت کرنے پر انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) نے آسٹریلیا کے سلامی بلے باز عثمان خواجہ پر فرد جرم عائد کی تھی۔اس سے قبل عثمان خواجہ نے پریکٹس سیشن کے دوران فلسطینیوں کے حق میں آواز بلند کرنے کے لیے خصوصی جوتے پہن کر شرکت کی تھی جس پر ’آزادی انسانی حق ہے‘ اور ’تمام انسانی جانیں برابر ہیں‘ جیسے نعرے درج تھے۔آئی سی سی کی جانب سے ایکشن کے بعد عثمان خواجہ کا کہنا ہے کہ وہ فرد جرم کے حوالے سے آئی سی سی سے بات کریں گے۔انہوں نے کہا کہ ’میں نے انہیں بتایا ہے کہ یہ ذاتی سوگ کے لیے تھا، میں نے کبھی نہیں کہا کہ یہ کسی اور چیز کے لیے ہے، جوتوں پر نعرے ایک الگ معاملہ تھا۔‘انہوں نے مزید کہا کہ ’میں آئی سی سی اور ان کے قواعد و ضوابط کا احترام کرتا ہوں، آئی سی سی سے درخواست کروں گا کہ وہ اپنے فیصلوں میں منصفانہ اور مستقل مزاجی کو یقینی بنائے اور سب کے ساتھ یکساں سلوک کی ضرورت پر زور کریں۔