بار ایسوسی ایشن کا مطالبہ

سرینگر// جموں کشمیر ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن نے حکومت ہند اور جموں کشمیر انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ کورونا وائرس کی دوسری لہر کے پیش بیرون ریاستی جیلوں میں نظر بند قیدیوںکو واپس کشمیر لایا جائے ۔ سی این آئی کے مطابق جموںکشمیر ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن کے ترجمان اعلیٰ جی این شاہین نے ایک بیان میں کہاکہ گزشتہ دنوں ایسوسی ایشن کے چیئرمین نظیراحمد رونگا کی صدارت میں ایک خصوصی اجلاس منعقد ہوا جس میں ملک کی مختلف جیلوں میں زیر حراست نظر بندوںکی صحت کے حوالے سے تشویش کا اظہار کیا گیا۔اجلاس میں کورونا وائرس کی دوسری لہر میں شدت کے چلتے بیرون ریاستی جیلوں میںنظر بند قیدیوںکی سلامتی کو لیکر تشویش کا اظہار کیا گیا اور ساتھ ہی حکومت ہند اور جموں کشمیر انتظامیہ سے گزارش  کی گئی کہ عالمی وبا کے پیش نظر کشمیری قیدیوں کو  بیرون جموں کشمیر کی جیلوں سے وادی منتقل کیا جائے۔ ان قیدیوں کے گھر والے کافی پریشان ہیں۔ بیان  کے مطابق اجلاس میں انتظامیہ سے گزارش کی گئی کہ ان قیدیوں کے معاملات پر دوبارہ نظرثانی کی جائے اور پھر پیرول پر رہا کیا جائے۔تہاڑ جیل میں قید افراد کی صحت کے حوالے سے کہا گیا ہے کہ حریت رہنما شاہد الاسلام کورونا مثبت ہے، بشیر بٹ برین ٹیومر میں مبتلا ہے، یاسین ملک، شبیر شاہ، نعیم خان، آسیہ اندرابی، ناہیدہ نسرین، ایاز اکبر اور دیگر کی صحت بگڑ رہی ہیں۔بیان میںمزید کہا گیا کہ گزشتہ ہفتے ۔تہاڑ جیل میںمقید شاہد الاسلام کورونا وائرس میںمبتلا ہو گئے جس کے بعد ان کے اہل خانہ تشویش میں مبتلاء ہوگئے ہیں ۔ بیان میںمزید کہا گیا کہ دیگر سیاسی قائدین مختلف امراض میں مبتلا ہوچکے ہیں اور ان کی صحت مندی کو لیکر ہمیں کافی فکر ہے لہذا حکومت ہند اور جموں کشمیر انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ تمام قیدیوں کی کشمیر واپسی کو یقینی بنائی جائے تاکہ انہیں کوئی بھی خطرہ لاحق نہ ہو اور ان کے اہل خانہ بھی پریشانیوں میں مبتلا نہ ہو  ۔