بارہمولہ کے 2 جنگجوئوں کی گرفتار ی کا دعویٰ

بارہمولہ//  بارہمولہ پولیس نے دعویٰ کیا ہے انہوں نے پاسپورٹ پر پاکستان گئے 2نو جوانوںکو واگہ سرحدپر گرفتارکیا ہے جو جنگجویانہ تربیت حاصل کر نے کے بعد لشکر طیبہ میں شمو لیت اختیار کر نے والے تھے ۔ایس ایس پی بارہمولہ نے بتایا کہ پولیس ،فوج اور سی آر پی ایف نے ایک مشترکہ کاروائی کے دوران کریری اور پٹن سے تعلق رکھنے والے 2نو جوانوں کو جو پاسپورٹ پر ہتھیاروں کی تربیت حاصل کر نے کی غر ض سے پاکستان گئے تھے ،کو گرفتار کیا ہے۔ انہو ں نے بتایا کہ دونوں نو جوانوں نے پاکستانی ویزا اسلئے حاصل کئے تھے کہ وہ پاکستان جاکر عسکری تربیت حاصل کر سکیں۔ انہو ں نے کہا کہ دو نو ں نو جواں پنجاب کے واگہ سرحدسے جونہی واپس آئے فورسز کی مشرکہ ٹیم نے انہیں جنگجو ئوں کی صف میں شامل ہو نے سے پہلے ہی گر فتار کر کے بڑی کامیابی حاصل کی ۔دو نوں جنگجوئوں کی شناخت عبدالمجید بٹ ولد حبیب اللہ بٹ ساکنہ مغل پورہ سالورہ کریری اور محمد اشرف میر ولد غلام احمد میر ساکنہ نلا پالپورہ پٹن کے بطور کی گئی دونوں جنگجو پاسپورٹ نمبر R 3981036اورN7084132 پر پاکستان گئے تھے ۔ انہو ں نے کہا کہ دونوں نے اس غر ض سے پاسپورٹ حاصل کئے تھے تاکہ وہ پاکستان جاکر جنگجویانہ تربیت حاصل کر سکیں اور اس میں یہ دونوں کامیاب ہو ئے ۔انہوں نے کہا کہ گر فتاری کے بعد لشکر طیبہ سے وابستہ دو نوں جنگجو ئوں نے اعتراف کیا کہ انہوں نے پاکستان کے اسلام آبا کے نزدیک جنگجوئوں کے ایک ٹرینگ کیمپ میں پاکستانی لڑ کوں کے ہمراہ تربیت حاصل کی ۔انہوں نے کہا کہ دو نوں گر فتار جنگجو ئوںنے اعتراف کیاکہ پاکستان میں ہم نے بلوچستان سے تعلق رکھنے والے 10سال عمر کے بچوں کے ہمراہ ٹرینگ کی جہاں پر ٹرینگ کی کمانڈ لشکر طیبہ سے وابستہ کمانڈر ہنزالہ عدنان اور عمر کر رہا تھا۔اس سلسلے میں بارہمولہ پولیس نے ایک ایف آئی آر زیر نمبر 12/2018 US 13 ULA(P)کے تحت کیس درج کر کے مزید تحقیقات شروع کر دی۔ پولیس نے والدین سے گزرش کی ہے کہ وہ اپنے بچوں پر کڑی نگا ہ رکھیں اور گھر سے طویل عرصہ غیر موجود رہنے کی صورت میں پولیس کو اطلاع کریں تاکہ اُن کی زندگیاں محفوظ رہیں۔