بارہمولہ میں سابق جنگجوئوں کی پاکستانی نژاد بیو یوں کا دھرنا

بارہمولہ //فیاض بخاری //شمالی قصبہ بارہمولہ میں سوموار کے روز سابق جنگجوئوں کی بیو یوں نے میں وطن واپس اور سفری دساویزات فراہم کرنے کے مطالبے کو لے کر احتجاجی دھرنا دیا ۔ احتجاج کے دوران خواتین نے اپنے بچوں کے ہمراہ لائن آف کنٹرول کو پارنے کرنے کے لئے اوڑی کی طرف مارچ کرنے کی کوشش کی ہے جس کو پولیس نے ناکام بنا دیا ۔ احتجاج میں شامل خواتین نے ہاتھوں میں بنر اُٹھاکر کریاپا پارک باہمولہ سے اپنا احتجاج شروع کیا جو قصبے  کے مین بازار سے گذر کر  خانپورہ پُل  پر پہنچا جہاںسے پولیس نے انہیں روکا۔ انہوں نے گورنر انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ ہمیں وطن واپس بیجا جائے ۔انہوں نے بتایا گزشتہ پندرہ سال کے دوران ان کے قریبی رشتہ دار یا کچھ ایک والدین انتقال کر گئے اور وہ ان کا آخری دیدار بھی نہیں کر سکے ہیں۔انہوں نے اس احتجاج میں اپنے بچوں کو بھی ساتھ اٹھایا احتجاج میں شامل ایک خاتون نے بتایا  کہ اس مرتبہ  وہ تنگ آئے ہیں اور ان کا پیمانے صبر سے لبریز ہوا ہے،اس لئے وہ سب بچوں سمیت یہاں جمع ہو کر اوڑی کے راستے سرحد پار کر کے اپنے گھروں کو جائیں گے تاہم پولیس نے انکی کوشش کو ناکام بنا دیا ہے۔ انہوں نے ہندوستان اور پاکستان سرکار سے پر نم آنکھوں سے اپیل کی ہے کہ ان کی وطن واپسی کے لئے انتظام کیا جائے۔اور انہیں سفری دستاویزات کے ساتھ ساتھ یہاں کے باشندے ہونے کی سند دی جائے تاکہ انہیں مزید مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے انہوں نے کہا کہ اگر چہ ہم نے کئی بار احتجاج درج کئے تاہم کوئی توجہ نہیں دی گئی ۔