بارشوں سے رہائشی مکانوں اور سرکاری سکولوں کو نقصان

بانہال // شدید بارشوں اور طوفانی ہواووں کی وجہ سے وادی چناب کے دیگر علاقوں کی طرح ضلع رام بن سے بھی رہائشی مکانوں اور سرکاری سکولوں کو مزید نقصانات کی اطلاعات موصول ہورہی ہیں اور سیلابی ریلوں نے سینکڑوں کنال ملکیتی اراضی اور پھلدار اور غیر پھلدار درخت سیلابی ریلوں کی نذر ہوگئے ہیں۔ ضلع رام بن کے بانہال ، مہومنگت ، کھڑی ، ترنہ ، ترگام ، پوگل پرستان ، سینابتی ، نرتھیال ، ہوچک ، سراچی ، اکھرن ، راج گڑھ وغیرہ کے علاقوں میں درجنوں رہائشی مکانوں اور ایک درجن کے قریب سرکاری سکولوں اور کچن شیڈوں کو چھتوں کے اکھڑنے کی وجہ سے زبردست نقصانات پہنچا ہے اور بعض رہائشی مکانوں اور سرکاری سکولوں کی ننگی دیواریں شدید بارشوں کی وجہ سے کریک ہوگئی ہیں۔ ضلع رام بن کے نرتھیال ، بانہال، بنکوٹ ، نئی بستی ، نیل ، ڈولیگام ، پھاگو ، چنجلو ، رام بن، کھڑی ، راجگڑھ ،گول سنگلدان  کے کئی علاقوں میں  لوگوں کی سینکڑوں کنال ملکیتی اراضی ، ثمر اور غیر ثمر دار درخت  اور عارضی پل بھی سیلابی ریلوں کی نذر ہوگئے ہیں۔ کھڑی اور پوگل پرستان تحصیل کے  کئی علاقوں سے لوگوں نے کشمیر عظمی کو بتایا کہ ان کے علاقوں میں مختلف ندی نالوں پر پلوں کی تعمیر نہ کئے جانے کی وجہ سے اور عارضی پلوں کے بہہ جانے کے بعد درجنوں علاقے اور بستیاں منقطع ہوگئی ہیں اور لوگ اپنے اپنے علاقوں میں محصور ہوگئے ہیں۔ بانہال ، رام بن ، گول سنگلدان اور پیر پنچال پہاڑی سلسلے پر اس موسم کی تازہ برفباری ہوئی ہے جس کی وجہ سے سردی کی شدت میں اضافہ ہوا ہے۔