اے بی وی پی کا رمضان سیز فائرکیخلاف مظاہرہ

 جموں //اکھل بھارتیہ ودیارتھی پریشد نے جمعرات کے روز گاندھی نگر میں ایک احتجاجی مارچ  منعقد کیا ،جسکی قیادت  اے بی وی پی کے ریاستی سیکرٹری دیپک گپتا کے ساتھ ساتھ دیگر لیڈران بھی کر رہے تھے۔مظاہرہ مرکزی سرکار کی جانب سے یکطرفہ سئیز فائر بندی کے خلاف منعقد کیا گیا تھا ۔احتجاجی طلاب نے سرکار کے فیصلہ کے خلاف نعرے بلند کئے ۔نمظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے اے بی وی پی کے ریاستی سیکرٹری دیپک گپتا نے کہا کہ بھارتی سرکار کی جانب سے یہ فیصلہ وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کے ایم اپر کیا گیا ، تاکہ وادی میں آپریشن آل اوٹ کی رفتار کم ہو جائے۔انہوں ے کہا کہ ایسی سئیز فائر اٹل بہاری واجپائی سرکار کے دوران سال  2000 میںبھی کی گئی تھی، جس سے وادی میں828ہلاک ہوئے۔انہوں نے کہا کہ ہتھیار چھیننے ا و ر بھارتی فوج پر شوپیاں میں گذشتہ روز ہوئے حملہ ہونے سے یہ عیاں ہے کہ سئیز فائر ناکام ہوکر رہ جائے گا۔انہوں نے مرکزی سرکار سے کہا کہ وہ بھارتی فوج کو وادی میں شہید ہونے کیلئے نہ رکھیں۔انہوں نے کہا کہ ایسے سئیز فائر سے کُچھ حاصل ہونے والا نہیں ہے۔مظاہرین سے خطاب کرتین ہوئے سکاسٹ جموں کے صدر حٰدر علی نے کہا کہ دہشت پسندوں کا کوئی مذہب نہیں ہوتا ہے ا ور سئیز فائر کا اعلان کرنے سے سرکار اسے مذہبی رنگت دینا چاہتی ہے ۔انہوں نے مودی سرکار سے یہ فیصلہ واپس لینے کا مطالبہ کیا۔مظاہریں سے پئیوش کھجوریہ، ودیش دلموترہ ،سیازش گپتا، نندتا شرما  ،سُگم اندوترہ، ترن شرما ،وشال بھگت،وشال سنگھ،نتن، آکاش شرما ،کوشل شرما ،رمنیک، انکت، منجیت،کوشل شرما  و دیگران نے بھی خطاب کیا