ای وی ایم کی نگرانی کے معاملے میں الیکشن کمیشن اپنا موقف واضح کرے : سپریم کورٹ

 نئی دہلی// سپریم کورٹ نے الیکٹرانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم) کی دیکھ بھال پرائیویٹ کمپنیوں کے انجینئروں سے کرائے جانے کو چیلنج کرنے والی درخواست پر منگل کے روز الیکشن کمیشن کو اپنا موقف واضح کرنے کو کہا۔  تاہم، عدالت عظمی نے اس معاملے میں رسمی نوٹس جاری نہیں کیا ہے ۔ جسٹس ارجن کمار سیکری اور جسٹس اشوک بھوشن کی بنچ نے صحافی آشیش گوئل کی پٹیشن پر سماعت کے دوران الیکشن کمیشن سے اس سلسلے میں اپنا موقف واضح کرنے کو کہا۔   عرضی گزار نے اس معاملے میں عدالتی جانچ کا حکم دیے جانے کا مطالبہ کیا ہے ۔ درخواست کو سماعت کے لئے منظور کرتے ہوئے عدالت نے درخواست گزار کو اپنی درخواست کی ایک کاپی الیکشن کمیشن کے وکیل کو فراہم کرنے کو کہا۔ معاملے کی آئندہ سماعت دو ہفتے بعد ہو گی۔  درخواست میں الزام لگایا گیا ہے کہ ای وی ایم کی دیکھ بھال میں الیکشن کمیشن پرائیویٹ کمپنیوں کے انجینئروں کی خدمات حاصل کرتا ہے ، جس پر روک لگائی جانی چاہیے اور صرف سرکاری حکام کو ہی اس کی دیکھ بھال کی اجازت دی جانی چاہئے ۔ جبکہ اب تک جتنی ای وی ایم بنائی گئی ہیں، ان کی تعداد الیکشن کمیشن کے ریکارڈ میں بتائی گئی تعداد سے کہیں زیادہ ہے ۔  درخواست گزار کا کہنا ہے کہ الیکشن کمیشن سے یہ پوچھا جانا چاہئے کہ اتنی بڑی تعداد میں ای وی ایم کہاں چلی گئی؟ یو این آئی