’ایک ملک، ایک انتخاب‘ قومی مفاد میں کسی پارٹی سے کوئی لینا دینا نہیں:کووند

عظمیٰ نیوزسروس

رائے بریلی//سابق صدر رام ناتھ کووند، جو “ایک قوم، ایک انتخاب” کے امکان کو تلاش کرنے والی کمیٹی کے سربراہ ہیں، نے کہا کہ بیک وقت انتخابات کا انعقاد قومی مفاد میں ہے اور اس کا کسی خاص سیاسی پارٹی سے کوئی لینا دینا نہیں ہے۔سابق صدر نے صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ “ایک ساتھ انتخابات کا انعقاد عوام کے لیے فائدہ مند ثابت ہو گا کیونکہ بچا ہوا ریونیو ترقیاتی کاموں کے لیے استعمال ہو گا۔”انہوں نے زور دیا”میں تمام سیاسی جماعتوں سے تعاون کرنے کی درخواست کر رہا ہوں کیونکہ یہ قومی مفاد میں ہے۔ کسی سیاسی جماعت کا اس سے کوئی لینا دینا نہیں ہے‘‘۔حکومت نے اس سال کے شروع میں کووند کی سربراہی میں اعلی سطحی آٹھ رکنی کمیٹی تشکیل دی تھی۔سابق صدر نے کہاکہ ہم لوگوں کے ساتھ مل کر کام کر رہے ہیں اور حکومت کو تجاویز دیں گے کہ ہم اس روایت کو دوبارہ کیسے نافذ کر سکتے ہیں۔میں نے تمام رجسٹرڈ قومی جماعتوں سے بھی رابطہ کیا ہے اور ان سے تجاویز مانگی ہیں۔ کسی وقت ان سب نے اس کی حمایت کی۔ ہم تمام سیاسی جماعتوں سے تعاون کی درخواست کرتے ہیں کیونکہ یہ قومی مفاد میں ہے۔اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ “ایک ملک، ایک انتخاب” سے کسی خاص سیاسی پارٹی کو فائدہ نہیں ہوگا، کووند نے کہا، “اگر اس پر عمل درآمد ہوتا ہے، تو مرکز میں اقتدار میں رہنے والی پارٹی کو فائدہ ہوگا، چاہے وہ بی جے پی ہو یا کانگریس یا کوئی اور پارٹی۔ کوئی امتیاز نہیں ہے۔” کووند نے کہا کہ سب سے زیادہ فائدہ عام لوگوں کو ہوگا کیونکہ بچائے گئے ریونیو کو ترقیاتی کاموں کے لیے استعمال کیا جائے گا۔