این سی پی ڈی پی دفعہ 370بھول گئے

سرینگر//اپنی پارٹی صدر سید الطاف بخاری نے کہا ہے کہ کچھ سیاسی جماعتوں کی طرف سے جموں و کشمیر کے لوگوں کے ریاستی درجہ حاصل کرنے کے بنیادی حق کے خلاف سازش کرکے اُن کے وقار سے سمجھوتہ کرنے کی کوششیں کی جارہی ہیں۔ بخاری نے کہاکہ اپنی پارٹی اپنے موقف پر قائم ہے اور یہ جموں وکشمیر کا ریاستی درجہ بحال ہونے تک اپنی جدوجہد جاری رکھے گی۔ انہوں نے کہا’’کچھ بھی ہوجائے، اِس مطالبے پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا‘‘۔این سی اور پی ڈی پی لیڈران کے حالیہ بیانات پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے الطاف بخاری نے کہاکہ ’’ اُن(پی ڈی پی، نیشنل کانفرنس)کی باتوں اور عوامی انداز سے ایسا لگتا ہے کہ وہ ریاست کی بحالی کے خلاف سازش کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا’’صرف اپنے متعصبانہ مفادات کی وجہ سے ِان جماعتوں نے جموں و کشمیر ریاست کے خلاف کام کرنا شروع کر دیا ہے۔ لداخ اور جموں و کشمیر کو دوبارہ ملانے کا اُن کا وعدہ بھی کھوکھلا ہے‘‘۔انہوں نے مزید کہا کہ یہ سب جاننے کے باوجود یہ دکھانا چاہتے ہیں کہ ریاست کا درجہ بھی ممکن نہیں ہے تاکہ وہ اُن وعدوں کی جوابدہی سے بچ سکیں جو انہوں نے پہلے کئے تھے۔انہوں نے کہاکہ اپنی پارٹی نے بار ہا یہ بات کہی ہے کہ ہماری سیاست حقیقت پسندانہ ہے۔ اپنی پارٹی ریاستی درجہ بحال کرنے پر اِس لئے زور دے رہی ہے کیونکہ یہ درجہ چھن جانے سے جموں وکشمیر کے لوگوں کی پہچان پر حملہ کیاگیاہے۔۔ اب ان جماعتوں نے ریاستی درجے کی بحالی کے خیال کو کمزور کرنے کی کوشش کرتے ہوئے موجودہ حیثیت میں انتخابات کرانے کی باتیں کرنا شروع کر دی ہیں۔دفعہ 370 حاصل کرنے کے بلند وبانگ باتوں کو درکنا رکر دیا ہے۔ اور جموں و کشمیر میں ریاست کی بحالی پر پراسرار خاموشی برقرار رکھے ہوئے ہیں۔ اپنی پارٹی صدر نے مزید کہاکہ اِن جماعتوں کی پول کھل گئی ہے جوکہ موقع پرست سیاستدان ہیں جوکہ کسی بھی چیز پر سمجھوتہ کر سکتے ہیں، اُن کے نعرے ہمیشہ کھوکھلے رہے۔