این ایچ ایم ملازمین کی برخاستگی کا معاملہ

ڈوڈہ //ڈوڈہ سول سوسائٹی نے گورنر انتظامیہ سے ڈوڈہ و ریاست کے دیگرحصوںمیں نیشنل ہیلتھ مشن ملازمین کی برخاستگی کے حُکم کو واپس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔ایک پریس بیان کے مطابق متعدد سول سوسائٹی ممبران اور ٹریڈ یونین لیڈروں بشمول اشتیاق احمد دیو،نصیر کھوڑا، جماعت علی آغا، غلام حسن پانپوری،کرامت اللہ نہرو،فردوس احمد کھوڑوانی اور ایڈوکیٹ حسن بابر نے محکمہ صحت میں این ایچ ایم کے تحت کام کر رہے ملازمین کی برخاستگی کے حُکم کو فوری طور منسوخ کرنے کی اپیل کی ہے، تاکہ یہ ملازمین اپنی ڈیوٹیاں جوائن کر سکیں۔پریس بیان میں کہا گیا ہے کہ برخاست کئے گئے ملازمین گُذشتہ12برسوں سے نیک نیتی اور لگن سے کام کر رہے ہیں اورا نہیں برخاست کرنے سے یقینی طور سے انکی زندگیاں متاثر ہونگی ۔ این ا یچ ایم ملازمین اپنے جائز مطالبات کے حق میں ریاست بھر میں 14جنوری کو ہڑتال پر گئے تھے،جس سے محکمہ صحت کی کارکردگی متاثر ہوئی کیونکہ دیہی صحت مراکز میںبیشتر عملہ این ایچ ایم کے تحت ہی تعینات کیا گیا ہے۔اسکے ساتھ ہی گورنر انتظامیہ سے برخاست شدہ ملازمین کو بحال کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے،تاکہ لوگوں کے مشکلات میں کمی لائی جا سکے۔ممبران نے یہ بھی الزام لگایا کہ ہڑتالی این ا یچ ایم ملازمین کو یقین دلایا گیا تھا کہ جونہی وہ اپنی ڈیوٹیاں جوائن کریں گے ، تو انکی برخاستگی کے حُکم کو واپس لیا جائے گا لیکن جونہی ان ہڑتالی ملازمین نے ہڑتال ختم کی تو برخاستگی کے احکامات ان کے حوالے کئے گئے، جس سے ان ملازمین میں مایوسی پھیل گئی ہے۔سول سوسائٹی نے ریاست کے گورنر ستیہ پال ملک، چیف سیکرٹری، پرنسپل سیکرٹری ہیلتھ اینڈ مشن ڈائریکٹر این ایچ ایم کو معاملہ میں فوری طور مداخلت کرنے کی اپیل کی،تاکہ این ایچ ایم لازمین کے کئیر ئیر کو بچایا جا سکے۔