این آئی اے کے بانڈی پورہ اور بمنہ میں چھاپے

بانڈی پورہ // قومی تحقیقاتی ایجنسی (NIA)نے کہا ہے کہ انہوں نے ریاستی پولیس کے ہمراہ کشمیر کے علاوہ بنگلورو اور منگلورو میں 5مقامات پر چھاپے مارے۔بانڈی پورہ میں باپ بیٹے کو حراست میں لیا گیا۔این آئی اے کے مطابق محمد امین عرف ابو یحیٰ ساکن کیرالا کی جنگجویانہ سرگرمیوں میں ملوث ہونے کیخلاف رجسٹر کیس کی تحقیقات کے سلسلے میں چھاپے مارے گئے۔ایجنسی نے پہلے ہی اس کیس کے سلسلے میں3افراد محمد امین،ڈاکٹر رئیس رشید اور مصیب انور کی گرفتاری عمل میں لائی ہے۔  بیان میں کہا گیا ہے کہ شام اور عراق میں  داعش کیساتھ رابطہ کی ناکام کوشش کے بعد محمد امین نے مارچ 2020میں کشمیر کا دورہ کیا تھا اور کشمیر میں مقیم محمد وقار لون عرف ولسن کشمیری کے ہمراہ جنگجویانہ سرگرمیوں کیلئے فنڈز اکٹھا کئے۔بینکوں کے ذریعہ محمد وقار کو فنڈز منتقل کئے گئے۔ بدھ کو کشمیر میں 3مقامات سمیت 5 جگہوں پر چھاپے ڈالے گئے۔اس دوران 4افراد کی گرفتاری عمل میں لائی گئی۔عبید حمید ساکن بمنہ سرینگر، مزمل حسین بٹ ساکن بانڈی پورہ،امر عبدالرحمان ساکن منگلورو، شنکر ونکٹیش پیرومل ساکن بنگلورو شامل ہیں۔ادھر ایجنسی نے بانڈی پورہ پولیس کے اشتراک سے بدھ کی صبح چٹے بانڈے میں دو الگ الگ مکانوں پرچھاپے ڈالے اور باپ بیٹے کو پوچھ تاچھ کیلئے حراست میں لیا۔ این آئی اے ٹیم نے مزمل احمد بٹ ولد غلام حسن بٹ اور وقار احمد لون ولد غلام محمد لون کے رہائشی مکانوں کو گھیرے میں لے کر باریک بینی سے تلاشی لی اور یہ سلسلہ کئی گھنٹوں تک جاری رہا۔ بعد میںمزمل احمد بٹ اور اس کے والد غلام حسن بٹ کوپوچھ تاچھ کیلئے اپنے ساتھ لے گئے ۔ مقامی لوگوں کے مطابق مزمل احمد بٹ چٹے بانڈے میں ایک ہارڈویر دکان پر بطور سیلز مین کام کررہا ہے جبکہ وقار احمد لون( بی اے سکینڈ ائر طالب علم)  دس مہینوں سے جیل میں بند پڑا ہے ۔