این آئی اے کا سابق ایس پی گرفتار، رہائشی مکان سیل

نئی دہلی// قومی تحقیقاتی ایجنسینے جمعہ کو اپنے سابق سپرنٹنڈنٹ آف پولیس (ایس پی) اور آئی پی ایس افسر اروند وجے نیگی کو ممنوعہ لشکر طیبہ گروپ کے اوور گراؤنڈ ورکر کو خفیہ دستاویزات دینے کرنے کے الزام میں گرفتار کر لیا۔اسکے شملہ میں رہائشی مکان کو بھی سیل کردیا گیا ہے۔این آئی اے نے ایک بیان میں کہا کہ نیگی، جسے 2011 کے آئی پی ایس بیچ میں ترقی دی گئی تھی، کو گزشتہ سال 6 نومبر کو این آئی اے کی طرف سے درج ایک کیس کے سلسلے میں گرفتار کیا گیا ہے۔یہ مقدمہ کالعدم لشکر طیبہ (ایل ای ٹی) کے اوور گراؤنڈ ورکرز (OGWs) کے نیٹ ورک کے پھیلاؤ سے متعلق ہے، جو بھارت میں دہشت گردانہ سرگرمیوں کی منصوبہ بندی اور ان کو انجام دینے میں مدد فراہم کرتا ہے۔این آئی اے نے اس معاملے میں پہلے ہی 6 لوگوں کو گرفتار کیا ہے۔ترجمان نے کہا"تحقیقات کے دوران، شملہ میں تعینات اے ڈی نیگی، نامی ایس پی کے کردار کی تصدیق کی گئی اور ان کے گھروں کی تلاشی لی گئی۔ یہ بھی پتہ چلا ہے کہ این آئی اے کے سرکاری خفیہ دستاویزات کو اے ڈی نیگی نے ایک اور ملزم کو لیک کیا تھا جو اس معاملے میں ایل ای ٹی کا او جی ڈبلیو ہے،"۔