این آئی اے کے ہاتھوں لیتہ پورہ کے شہری کی گرفتاری

سرینگر/قومی تحقیقاتی ایجنسی (این آئی اے) نے سوموار کو جنوبی کشمیر کے لیتہ پورہ میں ایک شہری کی گرفتاری عمل میں لائی۔

گرفتار شدہ پرالزام ہے کہ وہ سی آرپی ایف کے ایک کیمپ پر حملے میں ملوث ہے۔

گرفتار شدہ کی شناخت فیاض احمد ماگرے کے طور پر ہوئی ہے اور اس کے بارے میں سرکاری ذرائع نے کہا کہ وہ جیش محمد نامی عسکری گروہ کا بالائے زمین کارکن ہے۔

 ایک بیان کے مطابق فیاض نے لیتہ پورہ میں ایک فورسز کیمپ پر ہوئے حملے میں کلیدی کردار ادا کیا تھا۔

فیاض کو2001میں پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت گرفتار کرکے16ماہ تک پابند سلاسل رکھا گیا تھا۔

لیتہ پورہ میں سی آر پی ایف کیمپ پر دسمبر2017میں حملہ ہوا تھا ۔

مذکورہ حملے میں جیش محمد سے وابستہ تین عسکریت پسند مارے گئے تھے جن کی شناخت فردین احمد کھانڈے اور منظور بابا ساکنان پلوامہ اور عبد الشکور ساکنہ رائولاکوٹ پاکستان کے طور کی گئی تھی۔

عسکریت پسندوں کے اس حملے میں پانچ فورسز اہلکار ہلاک اور تین زخمی ہوئے تھے۔