ایم جی نریگا ملازمین کی منڈی میں کام چھوڑ ہڑتال

 
منڈی// ایم جی نرگا سکیم کے تحت کام کر رہے ملازمین نے تنخواہیں نہ ملنے اور دیگر مطالبات پر محکمہ کے خلاف کام چھوڑ ہڑتال جاری رکھی ہوئی ہے ۔ منڈی میں ملازمین نے بدھ سے کام چھوڑ ہڑتال شروع کرنے کا اعلان کرتے ہوئے محکمہ کے خلاف احتجاج کیا ۔ملازمین کاکہناہے کہ انہیں گزشتہ چھہ ماہ سے تنخواہیں نہیں دی گئیں جس کی وجہ سے ان کومالی مشکلات کاسامناہے جبکہ ان کے لئے حکومت کوئی جاب پالیسی بھی وضع نہیں کررہی ۔کشمیر عظمیٰ سے بات کرتے ہوئے جی آر ایس اشتیاق احمد نے کہا کہ گزشتہ چھہ ماہ سے انہیں تنخواہیں نہیں مل رہیں ۔انہوں نے کہا کہ منڈی اور لورن بلاک کے تمام کام ایم جی نریگا ملازمین سے لیا جا رہا ہے مگر انہیں تنخواہیں نہیں دی جاتی ۔انہوںنے کہاکہ اس سلسلہ میں انہوں نے کئی مرتبہ محکمہ کے اعلیٰ افسران سے بھی رجوع کیا اور مانگ کی کہ تنخواہیں وقت پر ادا کی جائیں لیکن ان کے کانوں جوں تک نہیں رینگتی ۔ان کا کہنا تھا کہ محکمہ کے وزیر ہمیشہ یہ دعویٰ کرتے رہتے ہیں کہ نریگا ملازمین ان کیلئے ایک کنبے کی حیثیت رکھتے ہیں مگرایسی فیملی کا کیا فائدہ جو بھکمری کاشکار ہو۔ایک اور ملازم معشوق احمد نے کہا کہ تنخواہیں نہ ملنے کی وجہ سے ملازمین کے بچوں کی تعلیم پر بھی اثر پڑرہاہے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ بچوں کی سکول فیس اور دوسرے لوازمات پور انہیںکرپارہے اور ان کی مشکلات روز بروز بڑھتی ہی جارہی ہیں ۔انہوںنے کہاکہ ان کی تنخواہیں واگزار کی جائیں اور ساتھ ہی جاب پالیسی وضع کی جائے ۔ انہوںنے مانگ کی کہ رہبر تعلیم کی طرز پر انہیں بھی پانچ سال کے بعد مستقل ملازمت فراہم کی جائے ۔ ملازمین کاکہناتھاکہ وہ مطالبات پورے ہونے تک کام چھوڑ ہڑتال جاری رکھیںگے ۔