ایمبولنس ڈرائیور کازدوکوب

سرینگر //کمونیٹی ہیلتھ سینٹر ہاجن میں تعینات ایک ایمبولنس ڈرائیور کو فوج کی13آر آر سے وابستہ اہلکاروں نے اسوقت زبردستی کیمپ لے جاکر زدکوب کیا جب وہ ایک پیلٹ متاثرہ نوجوان کو سرینگر کے صدر اسپتال پہنچانے کے بعد واپس سب سینٹر جارہا تھا۔فوج کی اس کاروائی کے خلاف سب سینٹر ہاجن کے ملازمین نے احتجاج کیا ۔ وہ ملوث فوجی اہلکاروں کے خلاف کاروائی کا مطالبہ کررہے تھے۔ بی ایم او ہاجن ڈاکٹر حیات ریشی نے واقعے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ’’فوج کے اہلکاروں کو کسی کے آنے کی خبر تھی تو انہوں نے غلطی سے ایمبولنس ڈرائیور کو پکڑ ا اور کیمپ میں لے گئے۔‘‘ بی ایم او ہاجن نے بتایا کہ نصیر احمد نامی ڈرائیور کو کیمپ کے اندر لیجاکر پیٹا گیا تھا تاہم کیمپ میں 10منٹ رکھنے کے بعد مذکورہ ڈرائیور کو رہا کیا گیا ۔‘‘ بی ایم او ہاجن نے کہا کہ ایس ڈی پی او ہاجن کی مداخلت کے معاملہ حل کیا گیا اور مذکورہ فوجی اہلکاروں نے اپنے رویے پر معافی طلب کرلی۔ بی ایم او ہاجن ڈاکٹر حیات ریشی نے کہا ’’ واقعے کے خلاف ہیلتھ سینٹر کے ملازمین نے ایک گھنٹے تک ہڑتال کا سلسلہ جاری رہا تاہم معاملہ طے ہونے کے بعد ملازمین نے اپنا کام پھر سے بحال کردیا۔  انہوں نے کہا کہ مذکورہ ڈرائیور صدر اسپتال سرینگر میں پیلٹ متاثر نوجوان کو چھوڑنے کے بعد واپس حاجن آرہا تھا۔