’ایران، سعودی عربیہ اور پاکستان کا آپسی اتحاد عالم اسلام کے مفاد میں ‘

سرینگر/بانی¿ انقلاب اسلامی ایران حضرت امام خمینیؒ کی 28 ویں برسی کی مناسبت سے کشمیر یونیور سٹی کے کنوکیشن ہال میں انجمن شرعی شیعیان کے اہتمام سے سمینار کا انعقاد کیا گیا۔ ”امام خمینیؒ ملت ساز قائد “ کے عنوان سے منعقدہ سیمینار میں انجمن شرعی شیعیان سربراہ آغا سید حسن ،انجمن حمایت الاسلام صدر مولانا خورشید احمد قانونگو، ریٹائر جسٹس حکیم امتیاز حسین ، سید تفضل سابقہ ایگزیکیٹیو پریزیڈنٹ جے کے بنک، سید محمد حسین موسوی شامل ہیں، اظہار خیال کیا ۔ مقررین نے امام خمینی ؒ کو عصر حاضر کی ولولہ انگیز ملت ساز شخصیت قرار دیتے ہوئے آپ ؒکے انقلاب آفرین اقدامات، افکار و نظریات پر تفصیلی روشنی ڈالی ۔ آغا سید حسن نے اپنے خطاب میں جذبہ¿ ملت سازی کوامام خمینیؒ کے کردار و عمل کا سب سے نمایاں پہلو قرار دیا۔ آغا حسن نے کہاکہ پاکستان ، ایران اور سعودی عربیہ دنیائے اسلام کے تین اہم ترین ممالک ہیں ، اگر یہ تین ممالک قرآن و سنت کے تقاضوں کے تحت متحد ہوجاتے تو استکباری قوتوں کا کوئی بھی اسلام اور مسلم دشمن منصوبہ کامیاب نہیں ہوسکتا ہے۔ مولانا خورشید احمد قانونگو نے عنوان کے مناسبت سے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ ملت ساز قائد وہی ہوتا ہے جو اللہ اور رسول ﷺ کی اطاعت میں یکتائے زمانہ ہو۔ انہوں نے کہا کہ ایک ملت ساز قائد کو جن بلند اخلاق اور صفات کا حامل ہونا چاہئے امام خمینی ؒ نے ایسی صفات بدرجہ اُتم موجود تھیں۔ ریٹائر جسٹس حکیم امتیاز حسین نے امام خمینیؒ کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ امام خمینیؒ علامہ اقبالؒ کے تصورات، افکار اور تمناو¿ں کے عملی نمونہ تھے۔ اقبالؒ جس انقلاب اور بیداری کے متمنی تھے امام خمینیؒ نے ایران میں وہ انقلاب برپا کیا۔ ادھر پیروان ولایت صدر مولانا شبیر احمد صوفی نے وسطی ضلع بڈگام کے خندہ کی مرکزی جامع مسجد زینبیہ میں مجلس ترحیم کا انعقاد کیا گیا جس میں وادی کے اطراف و اکناف سے آئے ہوئے لوگوں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی ۔ انہوںنے ایرانی انقلاب کے بانی آیت اللہ امام خمینی اور وادی کے معروف دینی رہنما مرحوم علامہ میر شیخ مہدی حسین نجفی ہمدانی کی برسیوں پر خراج عقیدت پیش کیا۔