ایران، امریکا کی دھمکیوں اور دباؤ میں نہیں آئے گا: حسن روحانی

تہران// ایران کے صدر حسن روحانی نے کہا ہے کہ امریکا، ایران پر مختلف پابندیاں لگا کر دباؤ ڈالنا چاہتا ہے لیکن ہم ان کے دباؤ میں نہیں آئیں گے، جنگی حالات کا سامنا بھی کرنے کو تیار ہیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے روسی خبر رساں ایجنسی کو انٹرویو دیتے ہوئے کیا، حسن روحانی کا کہنا تھا کہ چاہے کچھ بھی ہوجائے ایران، امریکا کے سامنے نہیں جھکے گا، ایرانی عوام حکومت کے ساتھ ہیں اور ہر قسم کے حالات کا بھرپور سامنا کر سکتے ہیں۔ خیال رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے گزشتہ ہفتے ایران کے ساتھ 2015ء  میں طے پانے والی جوہری ڈیل سے دستبرداری کا اعلان کیا تھا، جس کے بعد عالمی طاقتوں کی جانب سے انہیں سخت تنقید کا نشانہ بھی بنایا گیا تھا۔علاوہ ازیں گذشتہ روز امریکا کی جانب سے ایران پر نئی اقتصادی پابندیاں عائد کی گئی ہیں، جبکہ اسی تناظر میں روسی صدر نے آج انٹرویو دیا اور امریکا کی پالیسی پر شدید تنقید کی، تاہم واشنگٹن کی جانب سے مزید پابندیاں عائد کی جاسکتی ہیں۔یاد ہے کہ گذشتہ دنوں وائٹ ہاوس سے جاری کردہ بیان میں وائٹ ہاوس کی پریس سیکریٹری سارہ ہکابی سینڈرز نے کہا تھا کہ ایرانی پاسدارانِ انقلاب مشرق وسطیٰ میں بدامنی پھیلانے کا ذمے دار ہے۔امریکا نے یہ بھی کہا تھا کہ ایران کی ’آوارہ گردی‘ خطے کی سلامتی کے لیے سنگین خطرہ بن چکی ہے، اسے راہ رست پر لانے کے لیے دنیا تہران پر سخت دباو ڈالے، اگر ایران باز نہ آیا تو مزید پابندیاں لگائیں گے۔