اہم خبریں

ہائر سکینڈری سکول ساوجیاں میں پینٹنگ مقابلہ وسیمینار منعقد
عشرت حسین بٹ
منڈی// گاندھی جینتی مہااتسو کے سلسلے میں ماڈل ہائر سیکنڈری اسکول ساوجیاں پونچھ کی جانب سے تقریبات کا ایک سلسلہ منعقد کیا جا رہا تھا۔اپنے اختتامی پروگرام میں اسکول نے ایک پینٹنگ مقابلہ اور سیمینار کا انعقاد کیا جس میں گاندھیائی فلسفہ اور اس کی ہماری زندگیوں میں اہمیت کو اجاگر کیا گیا۔ پروگرام کا انعقاد ماڈل ہائر سیکنڈری سکول ساوجیاں کے ثقافتی سیل نے پرنسپل انور خان کی مجموعی رہنمائی اور نگرانی میں کیا۔ پروگرام کی کارروائی سکول کے ٹیچر عمران خان نے چلائی۔ سیمینار میں حصہ لینے والے طلباء میں ثقلین احمد، زینب کوثر، رضوان احمد، صابر جاوید اور شاہدہ پروین شامل تھیں۔ اس موقع پر صابر جاوید کو بہترین مقرر قرار دیا گیا۔ انہیں امن کی مطابقت پر کتاب سے نوازا گیا۔ محمد عاطف اور شمیم اختر کی پینٹنگز کو حاضرین نے خوب سراہا۔ رخسانہ بانڈے نے مہاتما گاندھی کے فلسفے پر ایک نظم سنائی جسے حاضرین نے خوب سراہا۔ اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے پرنسپل انور خان نے کہا کہ گاندھی جی کو حقیقی خراج عقیدت یہ ہے کہ ہم ان کی تعلیمات کو اپنی زندگی میں اپنائیں اور معاشرے میں فرقہ وارانہ ہم آہنگی اور امن کے لئے کوشش کریں۔ اس موقع پر محمد عارف ملک، رشمی سودن، جیوتی جموال اور پرویز خان نے بھی خطاب کیا۔

 

راجوری میں نوزائیدہ بچی کی لاش برآمد
سمت بھارگو
راجوری//راجوری ضلع کے تھنہ منڈی علاقے کے باریون گاؤں میں پیر کی شام ایک نوزائیدہ بچی کی لاش جھاڑیوں میں پڑی ہوئی ملی۔حکام نے بتایا کہ گاؤں کی جھاڑیوں میں ایک نوزائیدہ بچی کی لاش ملی جسے کچھ مقامی لوگوں نے دیکھا جنہوں نے پولیس کو اطلاع دی اور ایک ٹیم موقع پر پہنچی اور لاش کو اپنے قبضے میں لے لیا۔حکام نے بتایا کہ لاش کو تحویل میں لے کر اس سلسلہ میں مزید تحقیقاتی عمل شروع کردیا گیا ہے ۔ان کا مزید کہنا تھا کہ تھانہ تھنہ منڈی میں ایف آئی آرزیر نمبر 141/2022 درج کر کے مزید تحقیقات کا عمل شروع کردیا گیا ہے ۔

 

ہری میموریل اکیڈمی میں سائنسی نمائش میلہ منعقد
حسین محتشم
پونچھ// ہری میموریل ماڈرن پبلک اکیڈمی پونچھ کے زیر اہتمام سائنسی نمائش میلہ منعقد کیا گیا۔اس نمائش میں 100 سے زیادہ ماڈلز، ورکنگ اور نان ورکنگ ماڈلز کی نمائش کی گئی ۔اس سائنسی نمائش میں سکول میں زیر تعلیم طلباء کے والدین اور معززین علاقہ نے بھرپور شرکت کی۔ ڈسپلے ایک گاؤں سے لے کر آتش فشاں پھٹنے تک تھا جہاں بچوں نے حاضرین کے خواہش کے مطابق انگریزی، ہندی اور اردو میں بھی اپنی نمائش کے بارے میں وضاحت کی۔ پرنسپل منجو شرما اور وائس پرنسپل جوجی لال البرٹ نے طلباء کی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے کہا کہ سائنس نمائش طلباء کو سائنسی علم کو استعمال کرنے اور اپنے دماغ سے نئی ایجادات لانے کا ایک پلیٹ فارم فراہم کرتی ہے۔آخر پر طلباء میں انعامات تقسیم کئے گئے۔

صفائی ستھرائی سے متعلق فوج کا منجا کوٹ میں پروگرا م
راجوری //فوج نے گاندھی جینتی اور’ سوچھ بھارت ابھیان کے ایک حصے کے طور پر گورنمنٹ ہائر سیکنڈری اسکول منجاکوٹ راجوری میں صفائی مہم کا اہتمام کیا۔ اس مہم کا مقصد طلباء اور مقامی آبادی کو صحت مند طرز زندگی کے لئے صاف ستھرا اور حفظان صحت کے ماحول کو برقرار رکھنے کی تعلیم دینا تھا۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے معززین نے غیر منصوبہ بند فضلے کو ٹھکانے لگانے، غیر صحت مند طرز زندگی، کھلے سیوریج اور ذاتی صفائی کی وجہ سے پیدا ہونے والے صحت کے مختلف مسائل پر روشنی ڈالی۔ روزمرہ کی زندگی کے اس اہم پہلو کے لئے ایک دیرپا حل کے طور پر رویے میں تبدیلی لانے کی ضرورت پربھی زور دیا گیا ۔فوجی ماہرین نے حاضرین کو دیہی حفظان صحت اور صفائی کو فروغ دینے والی سرکاری اسکیموں اور ترغیبات کے بارے میں مزید آگاہ کیا گیا۔ سکول کیمپس اور منجاکوٹ مارکیٹ کی صفائی کی مہم میں طلباء اور والدین کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

 

پل دریا میں بہہ جانے سے عبور و مرور مشکل
پونچھ//پونچھ کی تحصیل سرنکوٹ کی حلقہ پنچایت سیڑی خواجہ میں واقعہ گورنمنٹ مڈل اسکول ہرمی ڈھکی کے قریب پل دریا کی نذر ہونے کی وجہ سے عام لوگوں کیساتھ ساتھ سکول میں زیر تعلیم بچوں کی مشکلات میں اضافہ ہو چکاہے ۔واضح رہے کہ حالیہ سیلاب کے دوران سرن نالے پر مختلف علاقوں کو جوڑنے والا پل کودریائی ریلہ اپنے ساتھ بہا کر لے گیاتھا جس کے بعد اس علاقہ کے لوگ لگاتار پل کی تعمیر نو کرنے اور وہاں جنگی سطح پر عارضی پل بنانے کامطالبہ کر رہے ہیں۔ اسکول میں زیر تعلیم بچوں نے بھی ضلع ترقیاتی کمشنر اندرجیت سے اپیل کی ہے کہ اس پل کو تعمیر کروائی جائے تاکہ ان کو اسکول جاتے وقت پریشانی نہ ہو۔ بچوں کے مطابق پل نہ ہونے کی وجہ سے انھیں دریا کو آر پار کرنے میں کئی طرح کا مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور اگر بارش ہو جائے تو وہ سکول ہی نہیں جا پاتے اور ان کی تعلیم متاثر ہوجاتی ہے۔انہوںنے لیفٹیننٹ گورنر ایس کے سنہا سے بھی اس سلسلہ میں مداخلت کی اپیل کرتے ہوئے پل کی فوری تعمیر کے لئے ہدایات جاری کرنے کی اپیل کی تاکہ ان کو راحت مل سکے۔

منڈی میں قدرتی آبی ذخائر تباہی کے دہانے پر
منڈی// قدرتی طور پر ضلع پونچھ کی تحصیل منڈی میں اپنے آپ میں مثال پانی کے چشمے سرکاری عدم توجوہی کے شکار ہیں جس کی وجہ سے مذکورہ آبی ذجائر تباہی کے دہانے پر پہنچ گئے ہیں ۔منڈی کے بیشتر علاقوں میں پائے جانے والے متعدد قدرتی آبی چشمے موسم گرما میں سرد اور سردی کے موسم میں گرم اور میٹھا پانی لوگوں کیلئے دستیاب رکھتے ہیں تاہم اس جدید دور میں مذکورہ چشمے انتظامیہ کی عدم توجہی کی وجہ سے آہستہ آہستہ ختم ہوتے جارہے ہیں ۔ بتایا جاتا ہے کہ کہیں دہائیوں سے ان چشموں کا پانی پینے اور گھریلو مقاصد کے لئے استعمال ہوتا ہے وہی یہ بات قابل ذکر ہے کہ منڈی تحصیل کے متعدد علاقہ جات میں سینکڑوں قدرتی چشمے تھے لیکن اب کی کہانی بالکل مختلف ہے کیونکہ اب ا ن چشموں میں سے بیشتر سرکاری عدم توجوہی کی وجہ سے سوکھ گئے ہیں اور مکینوں کے مطابق ان چشموں کو کچرے اور بدبو کے ڈھیروں نے گھیر رکھا ہے۔یہ وقت کی ضرورت ہے کہ ان آبی ذخائر کو محفوظ رکھنے کیلئے عملی بنیادوں پر اقدامات اٹھائے جائیں ۔غور طلب ہے پہاڑی علاقوں میں مذکورہ قدرتی چشموں کی مدد سے سینکڑوں کی تعداد میں گھروں میں پینے کیلئے صاف پانی استعمال کیا جاتا ہے جبکہ ان علاقہ میں بڑے پیمانے پر واٹر سپلائی سکیمیں بھی قائم نہیں ہیں جس کی وجہ سے زیادہ ترآبادی کا آج بھی انحصار ان ہی قدرتی چشموں پر ہے ۔منڈی قصبہ کے ایک نوجوان نے کہا کہ اس شہر کے تازہ پانی کے چشمے اپنی قدیم شان کھو چکے ہیں اور اگر دیکھا جائے جزوی طور پر سرکاری بے حسی اور لوگوں کی غفلت کی وجہ سے مذکورہ چشموں کی حالت انتہائی خراب ہوتی جارہی ہے ۔لوگوں نے انتظامیہ سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ ان قدرتی چشموں کی نشاندہی کر کے ان کو محفوظ رکھنے کیلئے عملی بنیادوں پر اقدامات اٹھائے جائیں ۔