اہم خبریں

جموں صوبہ کے3اضلاع میں مزید 9کوروناسے متاثر | 7اضلاع میں کوئی کیس نہیں،10مریض شفایاب،60ہنوز زیرعلاج
نیوز ڈیسک
جموں//حکومت نے کہا ہے کہ پچھلے چوبیس گھنٹوں کے دوران صوبہ جموں میں کورونا وائرس کے صرف09نئے معاملات سامنے آئے ہیںجبکہ مزید10مریض شفایاب ہوئے ہیں۔اس دوران 60مریض ہنوز زیرعلاج ہیں۔حکومت کی طرف سے جاری کئے گئے روزانہ میڈیا بلیٹن میںپچھلے چوبیس گھنٹوں کے دوران صوبہ جموںمیں ضلع وار کووِڈمثبت معاملات کی رِپورٹ فراہم کرتے ہوئے کہاگیا ہے کہ ضلع جموں میں06 ،ضلع ادھم پورمیں01اور ضلع کشتواڑ میں02نئے مثبت معاملے سامنے آئے ہیں۔راجوری، ڈوڈہ ،سانبہ ،کٹھوعہ ،پونچھ ، رام بن اوررِیاسی اضلاع میں کسی بھی کووِڈ مثبت معاملے کی کوئی رِپورٹ نہیں آئی ہے۔اس دوران مجموعی ہلاکتوں کی تعداد2,352تک پہنچ چکی ہے۔بلیٹن میں مزید کہا گیا ہے کہ اَب تک 2,66,14,654ٹیسٹوں کے نتائج دستیاب ہوئے ہیں جن میں سے 21ستمبر2022کی شام تک2,61,35,662نمونوں کی رِپورٹ منفی اور 4,78,992 نمونوں کی رِپورٹ مثبت پائی گئی ہے۔علاوہ ازیں اَب تک67,94,152افراد کو نگرانی میں رکھا گیا ہے جن کا سفر ی پس منظر ہے اور جو مشتبہ معاملات کے رابطے میں آئے ہیں۔ اِن میں551اَفراد کو گھریلو قرنطین میں رکھا گیا ہے جس میں سرکار کی طرف سے چلائے جارہے قرنطین مراکز بھی شامل ہیں ۔161فراد کوآئیسولیشن میں رکھا گیا ہے جبکہ598اَفراد کو گھروں میں نگرانی میں رکھا گیا ہے۔اِسی طرح بلیٹن کے مطابق67,88,057اَفرادنے 28روزہ نگرانی مدت پوری کی ہے۔کووِڈ ویکسی نیشن کے بارے میں بلیٹن میں بتایا گیا ہے کہ گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران 4,373کووِڈ حفاظتی ٹیکے لگائے گئے ہیں جس سے ٹیکوں کی مجموعی تعداد 2,45,46,882تک پہنچ گئی ہے ۔اِس کے علاوہ جموں و کشمیر میںزائد اَز 18 برس عمر کی صد فیصد آبادی کو ٹیکے لگائے جاچکے ہیں۔

 

پہاڑی سے گر کر تیندوے کی موت، پوسٹ مارٹم کے بعد لاش سپردِ آتش
محمد تسکین
بانہال// بانہال کے گنڈ ٹھٹھار علاقے میں بدھ کی صبح ایک تیندوے کو بیہوشی کی حالت میں پانے کے بعد اس کی اطلاع پولیس اور محکمہ جنگلی حیات کو دی گئی اور حیوانات کے ہسپتال لیجانے کی کوشش کے دوران اس جنگلی جانور کی موت واقع ہوگئی۔ اس کے بعد مردہ تیندوے کو ہسپتال پوسٹ مارٹم کیا گیا اور قانونی چارہ جوئی کے بعد اس تیندوے کو سپرد آتش کیا گیا۔ انچارج وائلڈ لائف کنٹرول روم بانہال نجم الدین نائیک نے بتایا کہ بظاہر یہ تیندوا اوپر پہاڑی سے گر جانے کے بعد شدید زخمی ہوا تھا اور مقامی لوگوں کی طرف سے اطلاع موصول ہونے کے فوراً بعد وائلڈ لائف کی ایک ٹیم موقع پر پہنچی اور علاج و معالجہ کیلئے بانہال ہسپتال برائے حیوانات لیجانے کے دوران اس تیندوے نے شاہراہ پر واقع چریل گائوں کے پاس دم توڑ دیا۔ انہوں نے کہا کہ بعد میں محکمہ اینمل ہسبنڈری سے ایک ڈاکٹر نے اس تیندوے کا پوسٹ مارٹم کیا اور بعد میں اس تیندوے کو سپردِ آتش کیا گیا۔ انہوں نے لوگوں سے اپیل کی کہ بستیوں میں جنگلی جانوروں کے آنے کی صورت میں لوگ احتیاطی تدابیر پر عمل کریں اور پتھراؤ یا کوئی ایسی حرکت نہ کریں جس سے کوئی جنگلی جانور حملہ آور ہوجائے۔ انہوں نے کہا کہ علاقے میں محکمہ کی ایک ٹیم موجود ہے اور مزید تحقیقات کی جارہی ہے۔

 

ڈوڈہ ضلع میں منشیات مخالف کارروائیاں جاری
بھدرواہ و گندوہ سے 2 افراد گرفتار، بھاری مقدار میں شراب ضبط
اشتیاق ملک
ڈوڈہ //ضلع کو منشیات سے پاک و صاف بنانے و اس کاروبار میں غیر قانونی طور پر ملوث سمگلروں کے خلاف اپنی مہم کو جاری رکھتے ہوئے پولیس بھدرواہ و گندوہ سے دو افراد کو حراست میں لے کر بھاری مقدار میں غیر قانونی طور پر سمگل کی جارہی شراب ضبط کی ۔ اطلاعات کے مطابق چنار محلہ بھدرواہ میں پولیس ٹیم نے ایک شخص کو مشکوک حالت میں دیکھا جس دوران اس کی تلاشی لی گئی اور شراب کی چالیس بولتیں ضبط کیں گئیں۔ اس کی شناخت راج کمار ولد ٹیک چند ساکنہ نالٹھی کے طور پر ہوئی ہے۔اس سلسلہ میں بھدرواہ تھانہ میں ایف آئی آر زیر نمبری 155/2022زیردفعہ48(a)ایکسائز ایکٹ کے تحت درج کر کے مزید تحقیقات شروع کی ہے۔ ادھر ایس ایچ او گندوہ وکرم سنگھ کی قیادت میں پولیس ٹیم نے بھڑگی موڑ پر ناکہ کے دوران ایک ایکواڈور گاڑی زیر نمبری Jk06B-2905 کی تلاشی لی جس کے شراب کی 13 بوتلیں ضبط کی گئی۔ اس دوران ڈرائیور محمد اسلم ولد لال محمد ساکنہ بھڑگی کو حراست میں لے کر ایف آئی آر زیر نمبری 66/2022زیردفعہ48(a)ایکسائز ایکٹ کے تحت درج کر کے مزید تحقیقات شروع کی ہے۔

 

کشتواڑ میں میڈیکل دوکانوں کا معائنہ
عاصف بٹ
کشتواڑ//نشہ مکت جموں و کشمیر ابھیان کے حصے کے طور پر ڈپٹی کمشنر کشتواڑ ڈاکٹر دیوانش یادو کی ہدایت پر ایک ٹیم نے کشتواڑ میں سائیکو ٹراپک ادویات کی فروخت اور ریکارڈ کی دیکھ بھال کے لیے میڈیکل سٹوروں کا معائنہ کیا۔ معائنہ کے دوران کیمسٹوں کو منشیات کی لت کے مضر اثرات کے بارے میں عام لوگوں کو آگاہی فراہم کرنے کے لیے بیدار کیا گیا۔ یہ بھی ہدایات دی گئیں کہ نشہ آور اور سائیکو ٹراپک ادویات بغیر نسخے کے فروخت نہ کی جائیں۔ کیمسٹوں سے کہا گیا کہ وہ نارکوٹک سائیکوٹرپک ادویات خریدنے والے مریضوں کے فون نمبر ریکارڈ کریں اور اس مقصد کے لیے علیحدہ رجسٹر رکھیںاور اصل نسخے پر کیمسٹ کی مہر لگانے اور ریکارڈ کے لیے فوٹو کاپی رکھنے کی بھی ہدایت کی گئی۔ ٹیم نے کیمسٹوں کو ہدایت کی کہ وہ منشیات کے استعمال کرنے والے صارفین کی موثر نگرانی کے لیے فوری طور پر اپنی دکانوں میں سی سی ٹی وی کیمرے نصب کریںاور ایسا نہ کرنے پر سخت کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ اس کے علاوہ کیمسٹوں کو ہدایت کی گئی کہ وہ اپنی دکانوں پر منشیات کے استعمال کے خلاف آگاہی پوسٹر چسپاں کریں تاکہ عام لوگوں میں اس لعنت کے بارے میں آگاہی پھیلائی جا سکے۔

 

جموںکشمیر کونمبر ون بنانا بھارت کونمبر ون بنانے کی مہم کا حصہ : معراج ملک
کہاعام آدمی پارٹی کے سکول اور ہیلتھ ماڈل کو عالمی سطح پرپذیرائی مل رہی ہے
جموں//بہتر تعلیم، صحت کی دیکھ بھال اور روزگار کے شعبے کو ترقی یافتہ معاشرے کی اہم کڑی بتاتے ہوئے عام آدمی پارٹی کے سینئر لیڈر اور ضلع ترقیاتی کونسل کے رکن معراج ملک نے کہا کہ صرف عام آدمی پارٹی ہی آزادی کے 75 سال بعد ہندوستان کو نمبر ون بنانے کا خواب پورا کر رہی ہے جب کہ دیگر سیاسی جماعتیں ملک کو ناکام کر چکی ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ جموں و کشمیر کو نمبر ون بنانا بھی بھارت کو نمبر ون بنانے کی مہم کا حصہ ہے۔پارٹی دفتر جموں میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے اروند کجریوال کی طرف سے شروع کی گئی میک انڈیا نمبر 1 مہم کا ذکرکرتے ہوئے ملک نے کہا کہ اروند کجریوال ملک کی آزادی کے 75 سال بعد ہندوستان کو نمبر 1 بنانے کے خواب کی تعبیر کر رہے ہیں کیونکہ دیگر تمام سیاسی جماعتیں اس میں ناکام رہی ہیں اور انہوں نے ملک کی ترقی کے بجائے اپنی ترقی کو ترجیح دی۔انہوں نے کہا کہ ترقی یافتہ معاشرے اور اسے نمبر 1 بنانے کے لیے بہتر صحت کی دیکھ بھال، تعلیم اور روزگار کے مواقع شرط ہیں اور عام آدمی پارٹی نے دہلی میں ان تمام شعبوں میں اصلاحات لا کر اپنی صلاحیت کو ثابت کیا ہے اور اب ان اصلاحات کے رجحان پر پنجاپ میں بھی عمل کیا جا رہا ہے۔معراج نے کہا “ہم نے بہترین سکول، بہترین صحت کی سہولیات، بڑے پیمانے پر روزگار کے مواقع کے ساتھ ساتھ نقل و حمل کی بہتر سہولیات، محفوظ ماحول، تکنیکی طور پر ترقی یافتہ دائرہ دیا ہے جو ہندوستان کو نمبر 1 بنانے کی شرط ہے اور وہ دن دور نہیں جب یہ تمام اصلاحات پورے طور پر نافذ ہو جائیں گی اور عام آدمی پارٹی کے ذریعہ ہندوستان نمبر 1 ہوگا”۔انہوںنے مزید کہا کہ جموں و کشمیر نمبر 1 مہم میک انڈیا نمبر 1 مہم کا حصہ بھی ہے اور جلد ہی جموں و کشمیر کے لوگ عام آدمی پارٹی کے بینر تلے تمام شعبوں میں ترقی کریں گے۔

 

راج گڑھ رام میں نوجوان کی لاش برآمد
نوزرونیال
رام بن // ضلع رام بن کے راج گڑھ علاقے میں ایک مقامی نوجوان شہری کی لاش ایک نالے میں پائی گئی۔ متوفی کی شناخت قابل سنگھ ولد جیا لعل ساکنہ درمن تحصیل راج گڑھ طور پر ہوئی ہے۔ پولیس نے لاش کو ضلع ہسپتال رام بن منقل کر کے پوسٹ مارٹم کرنے کے بعد لاش کو وارثین کے حوالے کر دیا ۔اس سلسلے میں پولیس نے معاملے کی نسبت کیس درج کرکے مزید تحقیقات شروع کی۔ بتایا جاتا ہے کہ متوفی سرینگر میں مزدوری کرنے کے بعد گھر آرہا تھا کہ گھرکے نزدیک سڑک کے کنارے لاش برآمد ہوئی۔

 

ڈوڈہ۔ کشتواڑ سڑک مسافروں کیلئے موت کا کنواں
چناب میں تعلیم اور صحت نظام وینٹی لیٹر پر، حکومت کی خصوصی توجہ درکار:منجیت سنگھ
کشتواڑ// اپنی پارٹی صوبائی صدراور سابقہ کابینہ وزیر سردار منجیت سنگھ نے ڈوڈہ۔ کشتواڑ سڑک کی خستہ حالی پر گہری تشویش ظاہر کی ہے جوکہ مسافروں کے لئے موت کا کنواں بن چکی ہے۔کشتواڑ میں ایک عوامی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے منجیت سنگھ نے کہاکہ سابقہ حکومتوں میں کشتواڑ سے وزارتی کونسل میں شامل ہونے کے باوجود اِس خطہ کے لوگ دہائیوں سے نظر انداز ہیں۔انہوں نے کہا’’ مجھے کشتواڑ۔ ڈوڈہ خستہ حال رابطہ دیکھ کر بہت حیرانگی ہوئی ہے کیونکہ یہی سڑک حادثات کی اہم وجہ بھی ہے۔ یہ سمجھ سے بالا تر ہے کہ ایک پورے خطہ کو جوڑنے والی انتہائی اہم سڑک کی اتنی بْری حالت ہے‘‘۔ انہوں نے کہاکہ دور دراز اور پسماندہ گائوں میںتو سڑکوں کی حالت اِس سے بھی بدتر ہے۔ موسم سرما کے دوران لوگوں کئی قسم کی مشکلات سے بھی گذرنا پڑتا ہے ، جب اْنہیں سب سے زیادہ انتظامیہ کی ضرورت درکار ہوتی ہے۔منجیت سنگھ نے کہاکہ سابقہ قانون سازیہ میں کشتواڑ کی زیادہ نمائندگی کانگریس، بی جے پی اور نیشنل کانفرنس نے کی ہے لیکن ایسا لگتا ہے کہ انہوں نے خطہ کی ترقی پر کوئی توجہ نہ دی۔لوگ بغرض علاج ومعالجہ اور تعلیم کے لئے جموں اور سرینگر کا رْخ کرنے پر مجبور ہیں۔ انہوں نے کشتواڑ میں ضلع ہسپتال اور دیگر پرائمری ہیلتھ سینٹرز میں سہولیات نہ ہونے پر تشویش ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے یہ ادارے بجائے مریضوں کا علاج کرنے صرف اْنہیں یہاں سے ریفر کرنے کا کام کر رہے ہیں۔انہوں نے مانگ کی کہ وادی چناب میں زیر تعمیر پن بجلی پروجیکٹ، روڈ ودیگر منصوبوں میں مقامی نوجوانوں کو روزگار فراہم کیاجائے۔ انہوں نے ضلع کشتواڑ کے دچھن کے ہونزڈگائوں اور پاڈر میں اْن لوگوں کو معاوضہ دینے اور بازآبادکاری کرنے کی مانگ کی جوکہ اپنے زرعی کھیت اور رہائشی مکانات کھوچکے ہیں۔ انہوں نے مطالبہ کیاکہ حکومت کو چاہئے کہ متاثرین کو مارکیٹ قیمت کے مطابق معقول معاوضہ دے۔انہوں نے سنتھن ٹاپ کو بھی ترقی دینے پرزور دیاتاکہ وہاں پر جموں وکشمیر اور ملک کے اطراف واکناف سے سیاح متوجہ ہوں۔ انہوں نے کہاکہ یہاں پر ہوٹل کھولے جانے چاہئے اور سرما کے دوران برف ہٹانے کے لئے مشینری اور عملہ مناسب تعداد میں رکھاجائے۔اس سے قبل کشتواڑ پہنچنے پر صوبائی صدر جموں ودیگر لیڈران نے مقامی لیڈران نے صوبائی سیکریٹری اسلم ملک اور ضلع صدر کشتواڑ موہندر سنگھ نے اْ ن کا شاندار والہانہ استقبال کیا۔صوبائی نائب صدر یوتھ ونگ عمر مینگو کی قیادت میں ایک موٹرسائیکل ریلی بھی نکالی گئی۔

 

سیزنل ٹیچرس ایسوسی ایشن وفدراجیہ سبھاممبر کھٹانہ سے ملاقی
مستقل پالیسی بنانے و سیزنل سکولوں میں بنیادی ڈھانچہ کی فراہمی کا مطالبہ
اشتیاق ملک
ڈوڈہ //محکمہ تعلیم میں کام کر رہے سیزنل ای ویز کا ایک وفد ممبر پارلیمنٹ انجینئر غلام علی کھٹانہ سے ملاقی ہوا اور اپنے مطالبات کو لے کر ایک یادداشت بھی پیش کی۔ضلع صدر سیزنل ٹیچرس ایسوسی ایشن ڈوڈہ چوہدری غلام نبی مجنوں و جنرل سیکرٹری چوہدری محمد یاسین شاہین کی قیادت میں وفد نے کھٹانہ کو ممبر پارلیمنٹ منتخب ہونے پر مبارک باد پیش کرتے ہوئے کہا کہ وہ کئی دہائیوں سے بطور ای وی پہاڑی علاقوں میں کام کررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ گجر بکروال طبقہ گرمیوں کے چھ ماہ میں پہاڑوں پر رہائش کرتے ہیں اور ان کے چھوٹے چھوٹے بچے بھی وہیں رہتے ہیں جہاں وہ بناء کسی سہولیات کے کھلے آسمان تلے تعلیم حاصل کرتے ہیں۔وفد نے مزید کہا کہ وہ کئی دہائیوں سے کام کررہے ہیں لیکن اس کے باوجود دفاتر میں ان کے ساتھ ناانصافی کی جاتی ہے۔ سیزنل ٹیچروں نے ان کے لئے مستقل پالیسی بنانے و چھ ماہ نزدیکی اسکولوں کے ساتھ اٹیچ رکھنے کا مطالبہ کیا۔نومنتخب ایم پی نے انہیں یقین دلایا کہ ان کو انصاف دلانے کے لئے وہ ہر ممکن کوشش کریں گے اور ایل جی حکومت و مرکزی سرکار کے ساتھ بھی اس معاملے پر بات کریں گے۔

کھڑی میں قانونی جانکاری کیمپ کا انعقاد
افسروں ، سینکڑوں لوگوں اور پنچایتی نمائندوںکی شرکت
محمد تسکین
بانہال// لوگوں کو اپنے حقوق اور مختلف محکموں کی طرف سے چلائی جارہی عوامی سکیموں کے بارے میں تحصیل لیگل سروس کمیٹی چیئرپرسن بانہال منصفہ سلونی آنند کی سربراہی میں گورنمنٹ ہائر سیکنڈری سکول کھڑی میں لیگل سروس کے تحت ایک بیداری پروگرام کا انعقاد کیا گیا۔ اس پروگرام میں منصفہ سلونی آنند کے ہمراہ ایس ڈی ایم بانہال ظہیر عباس بٹ ، تحصیلدار کھڑی امت اپدھائے ڈی ڈی سی کونسلر فیاض احمد نائیک ، سرپنچ شبیر احمد اور مختلف محکمہ جات کے افسران کے ساتھ ساتھ عوام اور پنچایتی نمائندوں نے شرکت کی۔ اس موقع پر لوگوں کی بھاری تعداد بھی موجود تھی۔ اس موقع پر مختلف محکمہ جات کے افسران نے اپنے اپنے محکموں کی طرف سے چلائی جا رہی سکیموں کے بارے میں وہاں موجود سینکڑوں لوگوں کو جانکاری فراہم کی۔اس پروگرام کا مقصد مختلف محکمہ جات کی سکیموں اور لوگوں کے حقوق کے حوالے سے عوام میں بیداری پیدا کرنا تھا۔تحصیل لیگل سروس کمیٹی بانہال کی چیئرپرسن منصفہ سلونی آنند نے کہا کہ تمام محکمہ جات کے افسران کا فرض ہے کہ وہ افسر شاہی کو چھوڑ کر لوگوں کو ان کے حقوق کے حوالے سے جانکاری دیں اور صحیح راستہ دکھا کر ان کی رہبری کریں تاکہ کم سے کم وقت میں لوگوں کے مسائل کا حل نکالا جا سکے۔

اجات شترو سنگھ نے یووا راجپوت سبھا ممبران کی عزت افزائی کی
جموں//بی جے پی کے سینئر لیڈر اور سابق وزیر ایم کے اجات شترو سنگھ نے رنوجے سنگھ کے ساتھ یووا راجپوت سبھا کے صدر راجن سنگھ ہیپی اور ان کی ٹیم کو 23 ستمبر کو مہاراجہ ہری سنگھ کے یوم پیدائش پر تعطیل کے حوالے سے تحریک کی کامیابی کے ساتھ قیادت کرنے پر مبارکباد دی۔ ہیپی کی تعظیم کرتے ہوئے سابق وزیر ،جو غیر منقسم سابق ریاست جموں و کشمیر کے آخری حکمران مہاراجہ ہری سنگھ کے پوتے ہیں،نے کہا کہ یووا راجپوت سبھا نے مہاراجہ ہری سنگھ کے یوم پیدائش پر تعطیل کی تحریک کی کامیابی سے قیادت کرکے تاریخ رقم کی ہے۔ انہوں نے 23 ستمبر کو چھٹی مانگنے کے لیے پرامن تحریک کی قیادت کرنے میں راجن سنگھ کے طرز عمل کی تعریف کی۔انہوں نے کہا کہ یووا راجپوت سبھا کے ممبران نے جو کردار ادا کیا وہ پوری طرح سے مثالی تھا جس کی وجہ سے ایل جی منوج سنہا نے مذکورہ تاریخ پر چھٹی کا اعلان کیا کیونکہ انہوں نے اس معاملے میں کسی کو موقع کی سیاست کرنے کی اجازت نہیں دی۔ انہوں نے سبھا کے ارکان کو 23 ستمبر کو مہاراجہ ہری سنگھ کے یوم پیدائش پر نکالی جانے والی جیت کی ریلی میں شامل ہونے کا بھی یقین دلایا۔