اگلے تین ماہ تک ‘من کی بات’ نہیں ہوگی،نوجوان ہمارا مستقبل پہلی بار ووٹ دینے والے انتخابات میں ریکارڈ تعداد میں پولنگ کریں:وزیر اعظم

یو این آئی

نئی دہلی// وزیر اعظم نے اتوار کو کہا کہ ماہانہ ریڈیو پروگرام ‘من کی بات’ آئندہ لوک سبھا انتخابات کے پیش نظر اگلے تین ماہ تک نشر نہیں کیا جائے گا۔پی ایم مودی نے 110 ویں ایڈیشن میں خطاب کرتے ہوئے کہا، آئندہ لوک سبھا انتخابات کے پیش نظر آئندہ تین ماہ تک من کی بات نشر نہیں کی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ3 اکتوبر 2014 کو شروع کی گئی، من کی بات کا مقصد ہندوستانی معاشرے کے مختلف طبقات، خواتین، بزرگوں اور نوجوانوں کو شامل کرنا ہے۔پروگرام کی 110ویں قسط میں، انہوں نے پہلی بار ووٹ دینے کے اہل نوجوانوں سے کہا کہ وہ انتخابات میں ریکارڈ تعداد میں پولنگ کریں اور کہا کہ ان کا پہلا ووٹ ملک کے لیے ڈالا جانا چاہیے۔ اگلے ماہ کسی وقت انتخابی شیڈول کے متوقع اعلان کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس بات کا امکان ہے کہ ماڈل کوڈ آف کنڈکٹ مارچ میں نافذ ہو جائے گا جیسا کہ 2019 میں کیا گیا تھا۔وزیراعظم نے کہا کہ یہ پروگرام کی بڑی کامیابی ہے کہ اسے اس کی 110 اقساط کے دوران حکومت کے سائے سے بھی دور رکھا گیا ہے اور زور دے کر کہا کہ یہ نشریات ملک کی اجتماعی طاقت اور کامیابیوں کے لیے وقف ہے۔مودی نے کہا کہ یہ عوام کا، عوام کے لیے اور عوام کا پروگرام ہے۔مودی نے پہلی بار ووٹ دینے والوں سے اپیل کی کہ وہ ریکارڈ تعداد میں اپنا ووٹ ڈالیں، اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ 18ویں لوک سبھا ان کی امنگوں کی علامت ہوگی۔مودی نے کہا کہ نوجوانوں کو نہ صرف سیاسی سرگرمیوں کا حصہ بننا چاہئے بلکہ اس دوران مباحثوں اور مباحثوں سے بھی آگاہ رہنا چاہئے۔”آپ کو یہ بات ذہن میں رکھنی چاہیے کہ آپ کا پہلا ووٹ ملک کے لیے ہونا چاہیے،” ۔وزیر اعظم نے کہا کہ انتخابی عمل میں نوجوان ووٹرز کی شرکت جتنی زیادہ ہوگی، اس کے نتائج ملک کے لیے اتنے ہی زیادہ فائدہ مند ہوں گے۔وزیر اعظم نے اتوار کے روز نوجوانوں میں منشیات کی بڑھتی ہوئی لعنت پر اپنی تشویش کا اظہار کیا اور کہا کہ نشے سے معاشرے اور ملک کو بہت بڑا نقصان ہوتا ہے۔ مودی نے زور دیا کہ منشیات ایک ایسی لعنت ہے جس پر قابو نہ پایا جائے تو زندگیاں تباہ ہو جاتی ہیں۔ انہوں نے ذکر کیا کہ مرکز نے 15 اگست 2020 کو “نشا مکت بھارت ابھیان” شروع کیا تھا، جو اب تک تقریباً 11 کروڑ لوگوں تک پہنچ چکا ہے۔انہوں نے کہا کہ”منشیات ایک ایسی لعنت ہے جس پر قابو نہ پایا جائے تو زندگیاں تباہ ہو جاتی ہیں‘‘۔ انہوں نے کہا کہ یہ مہم لاکھوں نوجوانوں کو منشیات کے جال سے آزاد کرے گی، اور ان کی توانائی کو قوم کی تعمیر میں استعمال کیا جا سکتا ہے۔ نوجوان ہمارا مستقبل ہیں،نوجوانوں کی ذمہ داری ہے کہ وہ اس امرت کال میں ‘وکشت بھارت’ بنائیں،” ۔