اڑائی و اعظم آباد میں پی ایم اے وائی سکیم کی عمل آوری میں ہیرا پھیری

منڈی//ضلع پونچھ کی تحصیل منڈی کی عظم آباد اور آڑآئی کی3پنچایتوں میں پردھان منتری آواس یوجنا کے تحت غریب لوگوں کے گھرمحکمہ دیہی ترقی کے ملازمین کی جانب سے مبینہ طورپر کاغذی سطح پر تعمیر کرنے کا شاخسانہ ہوا ہے جبکہ زمینی سطح پر غریبوں کاکوئی بھی رہائشی مکان تعمیر نہیں ہوا ہے ۔باوثوق ذرائع کے مطابق تحصیل منڈی کی پنچایت عظم آباد اور آڑائی کی تین پنچایتوں میں محکمہ دیہی ترقی کی طرف سے چلائے جانے والی سکیم (پی ایم اے وائی ) پردھان منتری آواس یوجنا کے تحت غریب لوگوں کو تعمیر کر کے دئیے جانے والے گھر زمینی سطح پر موجود نہیں ہیں بلکہ متعلقہ محکمہ کے ملازموں کی ملی بھگت سے کاغذوں تک محدود رکھ کر آن لائن کروائے گئے ہیں ۔ذرائع کے مطابق اگر چہ سرکار کی جانب سے تحصیل کی ان چاروں پنچایتوں میں رہنے والے غریب لوگوں کو پی ایم اے وائی سکیم کے تحت گھر تعمیر کرنے کے منصوبے بنائے گئے ہیں ان میں سے محض تیس فی صد لوگوں کو ہی محکمہ دیہی ترقی کی جانب سے گھر بنا کر دئیے گئے ہیں جبکہ ستر فی صدغریب لوگوں کے گھروں کے فنڈز کو محکمہ کے ملازمین کی ملی بھگت سے خرد بُرد کردیا گیا ہے ۔انہوں نے بتایا کہ مبینہ طورپر پنچایت سیکریٹری اور جی آر ایس کی ملی بھگت سے یہ سارا کاروبار چلایا جا رہا ہے اور غریب لوگوں کو اس سکیم کے تحت فائدہ پہنچانے کے بجائے ملازموں کی جیبیں بھری جارہی ہیں ۔ان تمام پنچایتوں کی غریب عوام نے لیفٹیننٹ گورنر سے اپیل کرتے ہوئے اس سنجیدہ نوعیت کے معاملے کا سنجیدہ نوٹس لے کر اعلیٰ آفیسران پر مشتمل ایک ٹیم تشکیل دی جائے تاکہ وہ پورے معاملہ کی تفصیلی تحقیقات کر کے ملوث ملازمین کیخلاف کارروائی عمل میں لائیں تاکہ غریبوں کو ان کا حق دلایا جاسکے ۔اس سلسلہ میں اسسٹنٹ کمشنر ڈیولپمنٹ سے متعدد مرتبہ رابطہ کرنے کی کوشش کی گئی تاہم انہوں نے فوج نہیں اٹھایا ۔