اچھی حکمرانی ،ترقی ،ذمہ داری اوراحتساب کشمیرمیں ہمارے اہداف

نئی دہلی//وزیراعظم ہندنریندرمودی نے ’اچھی حکمرانی ،ترقی ،ذمہ داری اوراحتساب‘کوکشمیرکیلئے مرکزی سرکارکے متعین کردہ مقاصدیا اہداف قراردیتے ہوئے کہاہے کہ جموں وکشمیرمیں قیام امن کیلئے مرکزی حکومت نے ایک مذاکرات کارکی تقرری عمل میں لائی ہے، جواپناکام جاری رکھے ہوئے ہیں ۔انہوں نے کسی بھی طرح کے تشددکوناقابل برداشت قراردیتے ہوئے کہاکہ اب بھارت میں دہشت گردانہ حملے ماضی کی داستان بن چکے ہیں ۔ وزیراعظم ہندنے ایک میگزین ’سوراج‘ کودئیے گئے تفصیلی انٹرویوکے دوران کہاہے کہ اپوزیشن جماعتوں کاکوئی ایجنڈانہیں ماسوائے اسکے کہ مودی کوکیسے ہٹایاجائے۔جموں وکشمیرکی سیاسی اورسیکورٹی صورتحال کے بارے میںنریندرمودی کاکہناتھا’’کشمیرمیں’ اچھی حکمرانی ،ترقی ،ذمہ داری اوراحتساب‘ہماری اولین ترجیحات اوربنیادی مقاصدواہداف ہیں ،اورہم ان مقاصدکوحاصل کرنے کیلئے کام کررہے ہیں ۔مودی نے کہاکہ جموں وکشمیرمیں لوگوں کواچھی حکمرانی فراہم کرنا،ترقیاتی عمل میں سرعت لانا،انتظامی سطح پرذمہ داری پیداکرنااورمختلف سطحوں پراحتساب وجوابدہی کوفروغ دیناہماری بنیادی اہداف اورمقاصدہیں ۔مودی نے کہاکہ جموں وکشمیرسے جڑے مسائل کاحل نکالنے نیزوہاں بحالی امن کی کوششوں کوتقویت پہنچانے کیلئے مذاکرات کادروازہ کھلا ر کھا گیاہے ۔انہوں نے کہاکہ مرکزی سرکارنے جموں وکشمیرمیں سبھی متعلقین کیساتھ مذاکرات کیلئے اپنانمائندہ مقررکردیاہے ۔وہ سماج کے مختلف حلقوں کیساتھ برابررابطے میں ہیں ۔انہوں نے کہاکہ مذاکرات کاراپناکام کررہے ہیں ،اوروہ ریاست کے مختلف علاقوں کادورہ کرکے وہاں لوگوں کیساتھ اپنے روابط کوبڑھارہے ہیں ۔ وزیراعظم ہندکاکہناتھاکہ اب بھارت میں دہشت گردانہ حملے ماضی کی داستان بن چکے ہیں۔مودی کاکہناتھاکہ ہم نے دہشت گردانہ سرگرمیوںکاقلع قمع کرنے کیلئے کارگرحکمت عملی مرتب کرکے اس پرعمل درآمدکوبھی یقینی بنایا،اوریہی وجہ ہے کہ اب ملک میں دہشت گردانہ حملے نہیں ہوتے ہیں ۔