اپنی پارٹی دفعہ370کی بحالی کیلئے قانونی لڑائی لڑنے کی وعدہ بند

سرینگر//اپنی پارٹی صدر سعید محمد الطاف بخاری نے پیر کے روز عہد کیا ہے کہ اُن کی جماعت جموں وکشمیر میںعوام کو سیاسی طور با اختیار بنانے کے لئے جدوجہد کرے گی جوکہ سال گذشتہ ریاست سے مرکزی زیرانتظام علاقہ میں تبدیلی کے بعد سے بے اختیار ہے۔ڈی ڈی سی انتخابات کے سلسلہ میں اننت کے کھنہ بل میں منعقدہ ایک پارٹی کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے بخاری نے کہاکہ اپنی پارٹی جموں وکشمیر کے لئے ریاستی درجہ کی بحالی یقینی بنائے گی اور تب تک پارٹی جموں وکشمیر کے شہریوں کی اراضی اور ملازمت کا تحفظ فراہم کرنے کے لئے کام کرے گی۔ انہوں نے کہا’’ اپنی پارٹی 5اگست 2019کو جموں وکشمیر کی تاریخ کا سیاہ دن مانتی ہے، جس دن نہ صرف دفعہ370اور35-Aختم کیاگیا بلکہ ہماری ریاست کو دو پھاڑ کر کے دو مرکزی زیرانتظام علاقوں جموں وکشمیر اور لداخ  بنایاگیا۔ اپنی پارٹی عدالت عظمیٰ میں خصوصی درجہ کی بحالی کے لئے قانونی لڑائی لڑنے کی وعدہ بند ہے اور جب تک یہ حاصل نہیں ہوجاتا، ہم ہاتھوں پر ہاتھ رکھ کر بیٹھ نہیں سکتے‘‘۔انہوں نے کہاکہ اپنی پارٹی کو اُمید ہے کہ سپریم کورٹ کا فیصلہ جموں وکشمیر کے لوگوں کے لئے بڑی راحت لیکر آئے گا، گذشتہ سال جوسیاسی فیصلے لئے گئے ، وہ جموں وکشمیر کے لوگوں کے لئے کوئی آسان بات نہیں، ہم 5اگست2019کے فیصلوں پر سپریم کورٹ کے فیصلے کا انتظار نہیں کرسکتے، ہمیں اراضی اور ملازمتوں پر ہمارے ڈومیسائل حقوق کا تحفظ کرنے کے لئے جدوجہد کرنی ہوگی‘‘۔ انہوں نے کہاکہ اپنی پارٹی نے دو جہتی حکومت عملی اپنائی ہے۔ ایک جو جموں وکشمیر کے خصوصی درجہ کی بحالی کے لئے سپریم کورٹ میں قانونی لڑائی اور دوسرا جموں وکشمیر کے لوگوں کے لئے زمین اور نوکریوں میں جامع ڈومیسال قوانین، آپ کو یہ جانکاری ہونا چاہئے کہ ہم نے کیسے چوبیس گھنٹوں کے اندر نوکریوں پر ڈومیسائل قوانین میں تبدیلی کروائی، پہلے صرف درجہ چہارم نوکریاں جموں وکشمیر کے نوجوانوں کے لئے مخصوص تھیں ،اب ہرزمرہ کی ملازمتوں کو کلی طور جموں وکشمیر کے اقامتی باشندگان کے لئے یقینی بنایاگیاہے ‘‘۔بخاری نے کہاکہ اپنی پارٹی نے وضاحت کے ساتھ یہ کہا ہے کہ جموں وکشمیر کی زمین پر ڈومیسائل قوانین ناقابل قبول ہیں اور اِن میں جموں وکشمیر کے لوگوں کی خواہشات کے مطابق ترمیم کی ضرورت ہے،اگر چہ زرعی اراضی کو فروخت کرنے پر بہت زیادہ سیف گارڈز دیئے گئے ہیں جوکہ جموں وکشمیر کے غیرمقامی کو منتقل نہیں کی جاسکتی ، لیکن ہم چاہتے ہیں کہ جموں وکشمیر میں زمین سے متعلق مکمل تحفظاتی قانون ہو‘‘۔ بخاری نے کہاکہ اپنی پارٹی عوام سے کوئی ایسا وعدہ نہیں کرے گی جو وہ پورا نہیں کرسکتی، ہماری جماعت کھوکھلے نعرؤں پر یقین نہیں رکھتی ، ہم لوگوں سے کئے ہوئے وعدوں کو عملی جامہ پہنانے کے لئے وعدہ بند ہیں۔‘‘اِس انتخابی کنونشن میں بڑی تعداد میں پارٹی ورکروں نے شرکت کی جن میں نوجوان اور بزرگ سبھی شامل تھے۔ پارٹی سنیئر نائب صدر غلام حسن میر نے اپنے خطاب میں اُمید ظاہر کی کہ ضلع اننت ناگ کے لوگ جموں وکشمیر کے دیگر علاقوں کی طرح اپنی پارٹی اُمیدواروں کی ڈی ڈی سی انتخابات میں حمایت کریں تاکہ وہ ضلع کی ہمہ جہت ترقی کے لئے با اختیار ہوں۔