اپنی، عزت ووقار، شناخت و ریاست کی بحالی کیلئے نیشنل کانفرنس کو مضبوط بنائیں :خالدنجیب سہروردی

ڈوڈہ //دفعہ 370 و 35اے کی منسوخی کے بعد جموں و کشمیر کا ہر شہری سماجی، معاشی، اقتصادی بحران کا شکار ہو چکا ہے، بھاجپا سرکار امن قائم رکھنے میں ناکام ہوچکی ہے۔نیشنل کانفرنس اپنی کھوئی ہوئی شناخت کی واپسی تک جمہوری عمل کے تحت اپنی جدوجہد جاری رکھے گی۔ان باتوں کا اظہار سابق وزیر و نیشنل کانفرنس کے سینئر رہنما خالد نجیب سہروردی نے صوبائی نائب صدر منتخب ہونے کے بعد پہلی بار ڈوڈہ واپسی پر پارٹی کارکنوں کی میٹنگ سے مخاطب ہوتے ہوئے کیا۔ اس دوران پارٹی کارکنوں نے خالدنجیب سہروردی کا شاندار استقبال کیا جبکہ نئے نامزد کئے گئے انچارج ضلع صدر ظفراللہ راتھر کی بھی تاج پوشی کی گئی۔صوبائی نائب صدر نے اس موقع پر بولتے ہوئے کارکنوں پر زور دیا کہ وہ ہندو مسلم اتحاد کو برقرار رکھتے ہوئے فرقہ پرست طاقتوں کے عزائم کو ناکام بنائیں اور زمینی سطح پر یکجہتی کے ساتھ کام کریں۔ انہوں نے کہا کہ نیشنل کانفرنس ہی ایک ایسی جماعت ہے جو جموں و کشمیر کو درپیش چیلنجوں سے نجات دلا سکتی ہے اور اس جماعت نے ہر مشکل دور میں اپنے سیکولر نظریہ کو برقرار رکھتے ہوئے مذہبی ہم آہنگی و آپسی بھائی چارے کو مضبوط بنایا ہے۔انہوں نے کہا کہ مذہبی، لسانی و علاقائی بنیادوں پر تقسیم کرنے والے عناصر کے مذموم عزائم کو ناکام بنانا وقت کی اہم ضرورت ہے۔انہوں نے کہا کہ جو کسی کی حق تلفی کرکے مشکلات و پریشانیاں پیدا کرتے ہیں وہ خود بھی اس کا شکار ہو جاتے ہیں۔انہوں نے لوگوں سے اپنی عزت، وقار، شناخت و ریاست کی بحالی کیلئے نیشنل کانفرنس کی طرف سے شروع کی گئی جدوجہد کا حصہ بنیں۔انہوں نے پارٹی کے سرپرست و سابق وزیر اعلیٰ ڈاکٹر فاروق عبداللہ کے ڈوڈہ و کشتواڑ اضلاع کے دورے کو کامیاب بنانے کی پارٹی کارکنوں سے دن رات محنت کرنے کی اپیل کی۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سہروردی نے کشمیری طلاب پر حالیہ دنوں ہوئی کارروائی کو افسوسناک قرار دیا اور کہا کہ موجودہ سرکار جموں و کشمیر کے لوگوں کے ساتھ ظلم و بربریت کا مظاہرہ کررہی ہے جس کا خمیازہ انہیں بھگتنا پڑے گا۔اس موقع پر ضلع یوتھ صدر نوید ہاشمی نے دیگر کارکنوں کے ہمراہ صوبائی صدر خالدنجیب سہروردی و انچارج ضلع صدر ظفراللہ راتھر کو پھولوں کی مالا پہنا کر استقبال کیا۔ ظفراللہ راتھر نے پارٹی سرپرست ڈاکٹر فاروق عبداللہ، عمر عبداللہ، علی محمد ساگر، رتن لال گپتا و خالد نجیب سہروردی کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ وہ اپنی ذمہ داریوں کو خوش اسلوبی سے نبھانے کی پوری کوشش کروں گا۔