آورہ کپوارہ آتشزدگی واردات پُراسرار :گیلانی

سرینگر// حریت چیئرمین سید علی گیلانی نے آؤرہ بازار میں پیش آئے آتشزدگی واردات کو پُراسرار قرار دیتے ہوئے گہری تشویش اور فکرمندی کا اظہار کیا ہے۔ اپنے ایک بیان میں گیلانی نے غیرجانبدارانہ تحقیقات عمل میں لائے جانے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ جموں کشمیر اور خاص طور سے سرحدی ضلع کپواڑہ میں درجنوں ایسی ایجنسیاں سرگرم ہیں، جو یہاں ہر ممکن طریقے سے خوف وہراس اور اقتصادی بدحالی پیدا کرنے کی درپے ہیں۔ انہوں نے متاثرین کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ لوگوں نے آگ کی اس واردات کے بارے میں جن شکوک وشبہات کا اظہار کیا ہے، وہ بے بنیادیا خالی از معنی نہیں ہیں۔انہوں نے کہا کہ فورسز کا واردات سے پہلے جائے وقوع کو بغیر کسی وجہ کے محاصرے میں لینا اور پھر آگ لگنے کے بعد فوج کا فائر سروس گاڑیوں کو بہانہ بناکر روکنا بہت سارے سوالات کو جنم دیتا ہے۔ ان سوالات کے جب تک لوگوں کو تسلی بخش جوابات نہیں دئے جاتے، ان کا احتجاج حق بجانب ہے اور اس کا سنجیدہ نوٹس لینے کی ضرورت ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ جموں کشمیر میں متعدد دیدنی اور نادیدنی قوتیں سرگرم عمل ہیں، جو یہاں خوف وہراس بھی پیدا کرنا چاہتی ہیں اور لوگوں کا اقتصادی طور کمر بھی توڑنا چاہتی ہیں۔ گیلانی کے مطابق ان کا اصل ہدف کشمیری قوم کی جدوجہد ہے، یہ قوتیں کشمیریوں کو دانے دانے کا محتاج بنانا چاہتے ہیں، تاکہ وہ تحریکِ آزادی کو پسِ پشت ڈالنے پر آمادہ ہوجائیں۔