آر ایس پورہ میں’’ڈرائی لیف کمپوزٹنگ‘‘ پر چار روزہ ورکشاپ کا آغاز

 سیکرٹری دیہی ترقی نے کسانوں کو نئی تکنیک کے استعمال کرنے پر زور دیا
جمو ں//سیکرٹری دیہی ترقی اور پنچائتی راج شیتل نندہ نے کسانوں پر زور دیا ہے کہ وہ ’’ڈرائی لیف کمپوزٹنگ‘‘ تکنیک کی بدولت سوکھے پتوں کو کھاد میں تبدیل کرنے کا عمل اپنائیں۔سیکرٹری موصوفہ آر ایس پورہ جموں میں اپنی نوعیت کے پہلے ’’ڈرائی لیف کمپوزٹنگ‘‘ اینڈ ویسٹ مینجمنٹ ٹول پر چار روزہ ورکشاپ کا افتتاح کر رہی تھیں۔ پروگرام کا اہتمام ڈائریکٹر رورل سینی ٹیشن جے اینڈ کے نے سی نواسن کے صلاح مشورے سے کیا تھا جو’’ڈرائی لیف کمپوزٹنگ‘‘ ٹیکنالوجی کے ماہر ہیں۔’’ڈرائی لیف کمپوزٹنگ‘‘ سوکھے پتوں کو گوبر اور پانی کے ساتھ ملا کر کھاد بنانے کا عمل ہے۔اس ایونٹ میں ڈائریکٹر رورل سینی ٹیشن جے اینڈ کے ڈسٹرکٹ پنچائت افسران، بی ڈی اوز، جونیئر انجینئر ز، گرام سیوک اور ہیلپروں نے شرکت کی۔دریں اثنا تقریب سے خطاب کرتے ہوئے شیتل نندہ نے کہا کہ پتوں کو جلانے سے پھیپھٹروں کی خطر ناک بیماریاں پیدا ہوتی ہیں۔ انہوں نے کسانوں کو صلاح دی کہ وہ قدرتی طور پر پتوں کو جلانے کے بجائے کھاد میں تبدیل کرنے کے عمل کو اپنائیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ60 دنوں کے اندر ہر گھرانے کو ایک آمدن کا نیا ذریعہ فراہم ہوگا جو انہیں سبزیاں اُگانے کے لئے اس کھاد کو بیچ کر حاصل ہوگا۔