آر آر بٹھناگر نے سرینگر کی تقریب میں سلامی لی

سرینگر// لیفٹیننٹ گورنر کے صلاح کار آر آر بھٹناگر نے سونہ وار کرکٹ اسٹیڈیم میں ترنگا لہرا یا اور مارچ پاسٹ پرسلامی لی۔ اس موقعہ پر انہوں نے خطاب کرتے ہوئے کہا ’’یہ دن ہندوستانی شہریوں کو اپنی حکومت منتخب کرنے کے لیے بااختیار بنانے کیلئے جشن کے طور پرمنایا جاتا ہے،اور اس نے ایک جدید قوم کے طور پر ہمارے ملک کی شناخت کو تشکیل دیا‘‘۔مشیر نے کا جموں و کشمیر کو منتظم بنانے کیلئے کئی اہم پالیسیاں صنعتی اورقتصادی منظر نامے کو بدل دیں گی۔ بھٹناگر نے کہا کہ ہم اس منفرد ملک میں ایک جمہوری قوم کے طور پر صرف اس لیے رہ سکتے ہیں کیونکہ سات دہائیاں قبل اسی دن ہمارا آئین بنا اور ہم نے ایک جمہوری ملک کے طور پر اپنے سفر کا آغاز کیا۔ مشیر نے کہا ’’ ہمارے آئین کے نظریے نے جدید ہندوستان کی بنیاد رکھی ہے جس میں ہم اس وقت رہ رہے ہیں جبکہ اس منفرد آئین کا مسودہ تیار کرکے اور اسے نافذ کرکے ایک مشترکہ قومی جذبہ پیدا کریں جو نسل در نسل رائج ہے‘‘۔ بھٹناگر نے کہاکہ جموں و کشمیر کے لیے یہ تاریخی لمحات ہیں کیونکہ یہ ایک نئی صبح دیکھ رہا ہے،اور یہ صبح  جموں و کشمیر کو امن کی طرف لے جائے گی۔انہوں نے کہا کہ بدگمانیوں کو دور کرنے کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ ہم اپنی اقدار کی پاسداری کے عزم کا اعادہ کریں۔ مشیر نے مزید کہا کہ جموں و کشمیر ہمیشہ سے ہندوستان کے اخلاقیات اور ثقافت کا ایک اٹوٹ حصہ رہا ہے اور ہر لحاظ سے ہر مذہب اور مختلف ثقافتوں کی ہر روایت کو اپناتا ہے اور یہ پرامن بقائے باہمی اس خوبصورت سرزمین کے باشندوں کی زندگیوں میں جھلکتی ہے۔ان کا کہنا تھا’’ہمیں اپنے ڈاکٹروں، نرسوں اور دیگر ہیلتھ ورکرز کا مقروض ہونا چاہیے جو اس وائرس کے خلاف ہماری جنگ میں مسلسل آگے رہے ہیں جبکہ بدقسمتی سے، ہمارے اپنے ہیلتھ ورکرز میں سے بہت سے اس وبائی مرض سے لڑتے ہوئے اپنی جانیں گنوا چکے ، وہ ہمارے قومی ہیرو ہیں‘‘۔مشیر نے مزید کہا کہ یہاں کووِڈ کی تیسری لہر کنٹرول میں ہے اور ہمیں محتاط رہنے کی ضرورت ہے۔