آج سے بینکنگ قوانین ہوں گے تبدیل| عام آدمی کی جیب پر پڑ سکتا ہے اثر

 
نئی دہلی// مرکزی کابینہ میں سال 2022 -23 کا بجٹ منظور ہوتے ہی آج (یکم فروری) سے بینکنگ سمیت کئی قواعد تبدیل ہو رہے ہیں۔ آپ کی زندگی سے متعلق ان اصولوں میں تبدیلی آپ کی جیب کو بھی متاثر کرنے والی ہے۔
 
 فروری کے مہینے میں، بینک آف بڑودہ، ایس بی آئی بینک اور پی این بی بینک کے لین دین سے متعلق قواعد بدل جائیں گے۔ 
 
آج سے ایل پی جی سلنڈر کی قیمتوں میں بھی تبدیلی ہوگی۔
 
آج یعنی یکم  فروری سے ٹیکس دہندگان کے ساتھ ساتھ تاجروں اور ملازمت پیشہ افراد کو بھی بجٹ سے بہت سی توقعات وابستہ ہیں۔ 
 
صنعت کارووں، تاجروں اور چھوٹے تاجروں کو بھی کافی امید ہے کہ حکومت کووڈ 19کی تیسری لہر کے دوران معیشت کو فروغ دے اور کاروبار کو بڑھانے میں مدد کرے۔
 
وہیں ایس بی آئی کے مطابق، 2لاکھ سے 5لاکھ روپے کے درمیان آئی ایم پی ایس کے ذریعے رقم ٹرانسفر کرنے پر 20روپے +جی ایس ٹی چارج لگے گا۔
 
بتا دیں کہ اکتوبر 2021میں، ریزرو بینک آف انڈیا نے آئی ایم پی ایس کے ذریعے لین دین کی رقم کو 2لاکھ روپے سے بڑھا کر 5لاکھ روپے کر دیا۔
 
 ریزرو بینک نے آئی ایم پی ایس کے ذریعے کی جانے والی لین دین کی حد بڑھا دی تھی۔ اب 2 لاکھ روپے کے بجائے ایک دن میں 5لاکھ روپے ٹرانسفر کر سکتے ہیں۔
 
پنجاب نیشنل بینک کے اکاؤنٹ میں رقم کی کمی کی وجہ سے قسط یا سرمایہ کاری فیل ہوجاتی ہے، تو آپ کو 250روپے جرمانہ ادا کرنا ہوگا۔ اب تک یہ جرمانہ 100روپے تھا۔
 
ٓوہیں ایل پی جی کی قیمتیں ہر مہینے کی یکم تاریخ کو طے ہوتی ہیں۔ اس بار یہ دیکھنا ہوگا کہ یکم فروری 2022 کو نئے سال کے دن سلینڈر کی قیمتوں میں اضافہ ہوتا ہے یا نہیں۔