آج دوپہر سے موسم بدلے گا

 
کنگن+شوپیان+بانہال//وادی میں جمعرات شام سے میدانی علاقوں میں کہیں ہلکی تو کہیں درمیانہ درجے کی بارش ہوتی رہی جبکہ پہاڑی علاقوں میں  درمیانہ درجے کی برفباری ہوئی۔ بارشیں ہونے اور برفبار ی کے نتیجے میں وادی شدید سردی کی لپیٹ میں آگئی ہے۔تاہم محکمہ موسمیات کے ڈائریکٹر سونم لوٹس نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ 3نومبر بعد دوپہر سے موسم میںپھربہتری آ ئیگی اور تا ہم ٹھنڈ بھر قرا رہے گی البتہ چار نومبر سے سردی میں کمی واقع ہوگی ۔ جمعہ کو وادی کے پہاڑی علاقوں سونہ مرگ ،گگن گیر ،زو جیلا ،پانداس ،دراس ،مٹائن ،گمری ،منی مرگ،گریز ، بگتوراور سادھنا ٹاپ کرناہ، مژھل اور کیرن کے پہاڑوں پربرفباری بھی ہوئی۔ اسی طرح کونثر ناگ، کونگہ وٹن، کوکر ناگ کے پہاڑوں پر بھی برفباری ہوئی۔ ادھرجنوبی ضلع اننت ناگ اور کولگام اضلاع میں جمعر ات  سے ہی بارشیں ہوتی رہیں۔اس بیچ سیاحتی مقام پہلگام اور کوکر ناگ کے سنتھن ٹاپ،ڈکسم ، متی گاورن و پہاڑی علاقوں میں ہلکی سے درمیانہ درجہ کی برف باری ہوئی ہے ۔مشتاق الحسن نے ٹنگمرگ سے معلومات فراہم کی ہیں کہ گلمرگ میں تازہ برف باری ہوئی ہے۔کونگ ڈوری میں5 انچ اور گلمرگ سے لیکر کاو نار موڈ تک 3 انچ تازہ برف ریکارڈ کی گئی ہے۔اس دوران شوپیان کے ہر پورہ، اہر بل، کونثر ناگ، پیر کی گلی،دوبجن اور کونگہ وٹن میں برفباری ہوئی ہے۔شوپیان میں رات بھر بارشیں ہوتی رہیں اور اسی دوران جمعہ کی صبح سے برفباری ہوتی رہی۔اس دوران رازدان پاس کے نزدیکی علاقوں میںدوران شب بارشیں اوردرمیانہ درجے کی برفباری ہونے کے بعدجمعہ کی صبح گریزبانڈی پورہ شاہراہ کوگاڑیوں کی آمدورفت کیلئے بندکیاگیا۔جبکہ کپوارہ کرناہ شاہراہ کوسادھناٹاپ کے نزدیک برفباری ہونے کے بعدبندکردیاگیا ۔ حکام نے پہلے ہی زوجیلا اور پیر کی گلی میں برفباری ہونے کے بعد لداخ اور مغل شاہرائیں بند کی ہیں۔ادھر جمعرات کی شام سے پیر پنجال اورٹنل کے آر پار جاری ہلکی اور درمیانے درجے کی بارشوں اور پہاڑوں پر برفباری کا سلسلہ جمعہ کو بھی جاری رہا تاہم جموں سرینگر شاہراہ پر ٹریفک کی روانی متاثر ہوئے بغیر جاری رہی-جمعہ کو جموں سے سرینگر کی طرف مال اور مسافر گاڑیوںکو یکطرفہ طور  چلنے کی اجازت تھی۔ادھر بانہال ،کھڑی ،مہو منگت،رام بن ،گول اور چناب وادی کے پہاڑوں پر ہلکی برف کی پرت بچھ گئی۔دریں اثناء صوبہ جموں کے سرحدی ضلع راجوری کے ایک دورافتادہ گائوں کنڈکریوٹ میں دوران شب آسمانی بجلی گرنے کے نتیجے میں بکروالوں کے ایک سوسے زیادہ بھیڑبکریاں ہلاک ہوگئیں ۔ لامبری اورتریاتھ میں آسمانی بجلی گری ،جسکے نتیجے میں یہاں عارضی طورپرمقیم بکروالوں کے عارضی آشیانے اسکی زدمیں آگئے ۔ آسمانی بجلی کی زدمیں آکر108بھیڑبکریاں ہلاک ہوئیں۔