آبی گزرگاہ کھلنے کی راہ ہموار | نہرِ سویز میں پھنسا ہوا جہاز تیرنے کے قابل

قاہرہ //مصر کی نہر سویز میں ایک ہفتے سے  زائد پھنسے رہنے والے مال بردار بحری جہاز کو جزوی طور پر ہٹا دیا گیا ہے اور یہ تیرنے کے قابل ہوگیا ہے۔ اس کے بعد اب یہ توقع کی جا رہی ہے کہ اہم آبی گزرگاہ جلد بحال ہو جائے گی۔سوئز کینال اتھارٹی نے بتایا ہے کہ 400 میٹر لمبے بحری جہاز 'ایور گرین' گزشتہ منگل کے اوائل میں تیز ہواؤں کے باعث نہرِ سوئز میں پھنس گیا تھا جس سے یورپ اور ایشیا کے درمیان بحری جہازوں کا مختصر اور مصروف ترین راستہ بند ہو گیا تھا۔دو سمندری اور شپنگ ذرائع نے بتایا کہ ہفتے کے آخر میں مزید کھدائی اور کوششیں کرتے ہوئے سوئز کینال اتھارٹی کے امدادی کارکن اور ڈچ فرم اسمت سیلویج کی ٹیم نے پیر کے اوائل میں چھوٹی کشتیوں کا استعمال کرتے ہوئے جہاز کو خشکی سے نکالنے کے لیے کام کیا۔سوئز کینال اتھارٹی نے کہا کہ ایور گرین کو نہر میں سیدھا کردیا گیا ہے اور پیر کو اسے لہروں کے دوش پر رواں دواں کردیا جائے گا، جیسے ہی جہاز کو پانی میں مکمل طور پر اتارا جائے گا تو سمندری ٹریفک بحال ہو جائے گا۔سوشل میڈیا پر شائع ویڈیو میں جہاز کو نہر میں گھوم کر جگہ کھولتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے، دیگر فوٹیج کی رائٹرز تصدیق نہیں کر سکا لیکن اس میں جہاز کے عملے کو خوشی منا کر ہارن بجاتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔