آئینی ضمانتوں کے ساتھ ریاستی درجہ کی بحالی

سرینگر//جموں وکشمیر پردیش کانگریس کمیٹی نے ہفتہ کو کہا کہ پارٹی آئینی ضمانتوں کے ساتھ ریاست کی بحالی کے لئے بھرپور طریقے سے جدوجہد کرے گی جو کہ مرکزی زیر انتظام خطے میں جمہوری عمل کا سنگ میل ہے۔ پارٹی کے ایک ترجمان نے بتایا کہ پردیش کانگریس نے سرینگر میں پارٹی کے سنیئر لیڈروں اور ر سابق ارکان قانون سازیہ کی میٹنگ منعقد ہوئی،جس میں موجودہ صورتحال پر بحث و مباحثہ کیا گیا ۔انہوں نے کہا کہ قائدین نے دہلی میں وزیر اعظم نریندر مودی کی زیرصدارت حال ہی میں منعقدہ کل جماعتی اجلاس پر بھی تبادلہ خیال کیا۔ترجمان نے بتایا کہ پردیش کانگریس کے صدر غلام احمد میر نے اجلاس کو بتایا کہ کانگریس پارٹی نے کل جماعتی اجلاس میں حلقہ بندیوں اور سیاسی عمل کے علاوہ آئینی ضمانتوں کے ساتھ ریاست کی بحالی پر زور دیا جس میں سابق وزیر اعلی اور حزب اختلاف کے لیڈر غلام نبی آزاد نے بھی شرکت کی۔میر نے کہا کہ پارٹی نے مرکز سے اپنے عہد کو پورا کرنے کے لئے اس سمت میں آگے بڑھنے پر زور دیا۔میر نے میٹنگ کو بتایا’’کل جماعتی اجلاس میں کانگریس پارٹی نے وزیر اعظم اور وزیر داخلہ کو بتایا کہ جموں کشمیر کے لوگوں نے بدترین دور دیکھا ہے اور یہ موقع ہے کہ لوگوں میں پائے جانے والے شکوک و شبہات ، خدشات کو دور کیا جائے۔‘‘ترجمان نے کہا کہ کل جماعتی اجلاس کے بارے میں بات چیت کے علاوہ کانگریس کے اجلاس میں عوامی اہمیت کے بہت سے امور پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ترجمان نے بتایا کہ اجلاس میں موجود  لیڈروں نے وزیر اعظم کے کل پارٹی اجلاس میں پارٹی کے نقطہ نظر کی تائید کی اور یقین دہانی کرائی کہ پارٹی جمہوری عمل کے لئے سنگ میل کی حیثیت سے آئینی ضمانتوں کے ساتھ ریاست کی بحالی کے لئے بھرپور جدوجہد کرے گی۔