اُساتذہ کی تربیت اور سکولوں کی اپ گریڈیشن

جموں//حکومت نے میوزک اینڈ فائین آرٹس کو ہائیر سکینڈری سطح پرپطور مضمون متعارف کرنے کے ساتھ ساتھ تمام سطحوں پرمعیار تعلیم میں بہتری لانے کا فیصلہ کیا ہے۔ان باتوں کا اظہار تعلیم کے وزیر سید الطاف بخاری نے جمو ں میں ایم ایل اے کولگام محمد یوسف تاریگامی کے ساتھ ضلع کولگام کے تعلیمی معاملات کے حوالے سے تبادلہ خیال کرنے کی غرض سے منعقدہ ایک میٹنگ کے دوران کیا۔وزیر موصوف نے اس موقعہ پر کہا کہ ابتدائی طور پر سکولی تعلیم کو مزید فعال اور نتیجہ خیز بنانے کے لئے اقدامات کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ابتدائی تعلیمی نظام کو مستحکم بنانے کی طرف خصوصی توجہ دی جارہی ہے۔انہوں نے کہا کہ ڈائٹ اداروں کو اساتذہ کے لئے معیاری تربیت کا مرکز بنایا جائے گا۔انہوں نے دونوں صوبوں کے ڈائریکٹروں سے کہا کہ وہ یہ عمل شروع کرنے پر ہر ایک ضلع میں ریسورس افراد کی ایک اچھی ٹیم تیار کریں تا کہ اساتہ کو تربیت سے ہمکنار کیا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ اس عمل سے تعلیمی شعبۂ کو معیار کی بلندیوں تک لے جانے میں مدد ملے گی۔ایم ایل اے کولگام کی طرف سے اُبھارے گئے معاملات کے تناظر میں وزیر موصوف نے کہا کہ ایچ ایس ایس معاملات کے تناظر میں وزیر موصوف نے کہا کہ ایچ ایس ایس پرنسپلوں کی خالی پڑی اسامیوں کو پُر کرنے کیلئے ترقیوں کا کام شروع کیا جائیگا۔انہوں نے کہا کہ ایس ایس اے اور رمسا کے تحت سکول عمارتیں تعمیر کرنے کے کام کی متواتر نگرانی کی جاتی ہے۔انہوں نے کہا کہ اس دوران کاموں کے معیار کو برقرار رکھنے کی طرف بھی خصوصی توجہ دی جاتی ہے۔وزیر نے کہا کہ حکومت نے تعلیمی اداروں کو اگلی سطح تک بڑھاوا دینے کے لئے سکولوں کی جانچ کا عمل بھی شروع کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے رہنما خطوط پر عمل کیا جائے گا۔ایم ایل اے محمد یوسف تاریگامی نے ریاست میں تعلیمی معیار کو بہتر بنانے کے حوالے سے اپنی تجاویز سامنے رکھیں۔ انہوں نے ڈگری کالج میں عربی، سٹییسٹک جیسے مضامین متعارف کرنے کا بھی مطالبہ کیا۔سیکرٹری تعلیم فاروق شاہ، ڈائریکٹرز سکول ایجوکیشن کشمیر/ جموں اور محکمہ کے دیگرسینئر افسران بھی میٹنگ میں موجود تھے۔