اُترپردیش انتخابات

لکھنو/اترپردیش میں تیسرے مر حلی کے تحت 16 اضلاع کی 59سیٹوں پر جاری ووٹنگ میں  شام 5 بجے تک 57.58فیصدی رائے دہندگان نے اپنی حق رائے دیہی کا استعمال کیا ہے۔الیکشن کمیشن سے موصول اعدادوشمار کے مطابق شام 5 بجے تک  سب سے زیادہ ضلع للت پورمیں 67.38فیصدی ووٹنگ ہوئی ہے جبکہ کانپور (شہر ) میں سب سے کم50.76فیصدی ووٹر وں نے ہی اپنی حق رائے دیہی کا استعمال کیا ہے۔جبکہ دیگر اضلاع میں ہاتھرس میں 59.00ف یصدی، فیروز آباد میں57.41فیصدی، کاس گنج میں 59.11ف یصدی، ایٹہ میں 63.58،مین پوری میں 60.80 فیصدی،فرخ آباد میں54.55فیصدی،قنوج میں 60.28فیصدی،اٹاوہ میں 58.35فیصدی،اوریا میں 57.55فیصدی،کانپور دیہات میں 58.48 فیصدی، جالون میں 53.84فیصدی، جھانسی میں 57.71ف یصدی، ہمیر پور میں57.90فیصدی،مہوبہ میں 62.02فیصدی رائے دہندگان نے اپنی حق رائے دیہی کا استعمال کیا ہے۔ الیکشن کے دوران ضلع للت پور کے صدر اسمبلی حلقے کے صدر کوتوالی کے محلہ رام نگر کھرکا پورا میں بوتھ نمبر 392 پر تعینات الیکشن افسر انورگا گرو دیو کے ذریعہ بغیر پرچی ے ووٹ نہ ڈالنے کے سلسلے میں ایس ڈی ایم صدر سے کہا سنی ہوگئی۔ جس کے بعد ایس ڈی ایم نے افسر کو حراست میں لے کر کوتوالی میں بٹھا دیا اور دوسرے انتخابی افسر کا نظم کیا۔ایس  ڈی ایم کے ذریعہ اس ضمن میں جاری بیان کے مطابق اپنے فرائض کی ادائیگی میں تساہلی اور ووٹر لسٹ کے سلسلے میں کچھ گمرہی کی وجہ سے انہیں اسی اہلیت کے دیگر اہلکار سے تبدیل کردیا گیا ہے۔اور ووٹنگ کا عمل جاری ہے۔کوتوالی میں بیٹھائے گئے افسر کے خلاف ابھی کوئی کاروائی طے نہیں کی گئی ہے۔وہیں ووٹنگ کے دوران کانپور کے میئر اور بی جے پی لیڈر پرملا پانڈے پر ووٹنگ کی رازداری  افشاں کرنے کے الزام میں  مقامی انتظامیہ نے انتخابی ضوابط کے تحت ان کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم دیا ہے۔موصول اطلاع کے مطابق پانڈے کانپور کے ہڈسن اسکول واقع پولنگ بوتھ پر ووٹنگ کرنے پہنچی تھیں۔ اس دوان ای وی ایم کا بٹن دباتے ہوئے میئر کی تصویر سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی۔ تصویر میں وہ  جس نشان پر ووٹ کررہی ہیں وہ صاف عیاں ہے۔اس پر کانپور ضلع الیکشن افسر نہا شرما نے کہا کہ پانڈے کے ذریعہ پولنگ سنٹر پر ووٹنگ کی رازداری کو افشاں کرنے کی اطلاع ملی ہے۔