اُتراکھنڈ میںبارشوں کا قہر | 3نیپالی مزدور ہلاک، چاردھام یاترا عارضی طورمعطل

دہرادون// اتراکھنڈ میں مسلسل دوسرے دن مسلسل بارش سے نیپال کے تین مزدور ہلاک اور دو زخمی ہوگئے ۔حکام نے چاردھام یاتریوں کو مشورہ دیا کہ موسم بہتر ہونے تک ہمالیائی مندروں میں نہ جائیں۔ضلع مجسٹریٹ وجے کمار جوگڈنڈے نے بتایا کہ مزدور ضلع پاڑی کے لینس ڈاون کے نزدیک خیمے میں ٹھہرے ہوئے تھے جب بارش کی وجہ سے اوپر کے کھیت سے ملبہ نیچے بہہ رہا تھا۔وہ اس علاقے میں ایک ہوٹل کی تعمیر کے کام میں مصروف تھے۔ انہوں نے بتایا کہ زخمیوں کو کوٹدوار بیس ہسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔دریں اثنا ، چاردھام یاتری جو اتوار تک ہریدوار اور رشی کیش پہنچے ہیں ان سے کہا گیا ہے کہ جب تک موسم بہتر نہیں ہوتا آگے نہ بڑھیں ، جبکہ ہمالیہ کے مندروں کے لیے گاڑیوں کا آپریشن عارضی طور پر معطل کردیا گیا ہے۔چار دھام جانے والے عقیدتمندوں سے انتظامیہ نے محفوظ مقامات پر رہنے کی اپیل کی ہے۔ کئی عقیدت مند ہری دوار ریلوے اسٹیشن اور رشی کیش بس اسٹینڈ پر ٹھہرے ہوئے ہیں، تاہم انتظامیہ کے اعلان کے بعد رشی کیش بس اسٹینڈ میں چار دھام سے متعلقہ گاڑیوں کی آمدورفت روک دی گئی ہے اور رشی کیش – لکشمن جھولا سڑک کو یک طرفہ کردیا گیا ہے۔ وہیں پولیس نے چندر بھاگا پل، تپوون، لکشمن جھولاسے مسافر گاڑیوں کا داخلہ بند کر دیا ہے۔