اوڑی سب ضلع ہسپتال میں احتجاج ،ڈرائیور کی مار پیٹ کا الزام

اوڑی//اوڑی سب ضلع ہسپتال میں ڈاکٹروں اور نیم طبی عملے نے سنیچر کوایس ڈی ایم اوڑی کے خلاف احتجاج کیا۔ احتجاجی عملے نے کہا کہ گزشتہ شام جبلہ اوڑی میں دو گھروں کے درمیان لڑائی میں 18 سالہ نازیہ نامی لڑکی زخمی ہوئی جس کو اوڑی ہسپتال لانے کے بعد ضلع ہسپتال منتقل کیا گیا تھا مگر ہسپتال کے ڈرائیور نے زخمی لڑکی کے گھر والوں سے گاڑی کاکرایہ ادا کرنے کے لئے کہا۔انہوں نے الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ایس ڈی ایم اوڑی نے ہسپتال میں داخل ہوکرنرمل سنگھ نامی ہسپتال ڈرائیور کی مار پیٹ کی۔ ہسپتال کے میڈیکل آفیسر ڈاکٹر نعمان نے ایس ڈی ایم اوڑی کی اس حرکت پرافسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اگر ایس ڈی ایم کو ہسپتال عملہ سے کوئی شکایت تھی تو انہیں مارپیٹ کے بجائے ہسپتال ذمہ داروں کو آگاہ کرنا تھا۔ ادھر ایس ڈی ایم اوڑی بصیرالحق چوہدری نے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ جبلہ اوڑی کی لڑکی لڑائی کے دوران زخمی ہوئی تھی جسے اوڑی ہسپتال میں گاڑی فراہم نہیں کی جا رہی تھی۔انہوں نے کہا’’میری مداخلت کے بعد ہی زخمی لڑکی کو ہسپتال سے گاڑی فراہم کر کے ضلع ہسپتال بارہمولہ منتقل کیا گیا‘‘۔ایس ڈی ایم کے مطابق لڑکی کے گھر والوں کو بتایا گیا تھاکہ پہلے گاڑی کاکرایہ ادا کرو پھر گاڑی فراہم کی جائے گی۔ایس ڈی ایم کے مطابق اُس وقت گھر والوں کے پاس پیسے نہیں تھے توکیازخمی لڑکی کومرنے دیا جاتا۔