اننت ناگ میںدنگل پی ڈی پی کارکن گھتم گھتا

اسلام آباد(اننت ناگ)//اننت ناگ میں کل پی ڈی پی کی میٹنگ اس وقت پانی پت کے میدان میں تبدیل ہوگئی جب وزیر اعلیٰ کے” سی ڈی ایف“فنڈس میں ہیر پھیر پر پارٹی کے دو گرپوں میں تصادم آرائی ہوئی جس میں ضلع اور زونل صدر سمیت کئی کارکن زخمی ہوئے۔اسلام آباد(اننت ناگ) ڈاک بنگلہ کی ہاو¿سنگ کالونی میں قائم پی ڈی پی آفس میں اس وقت پارٹی ورکران اور ضلع عہداران کے درمیان ہاتھا پائی ہوئی جب ایک میٹنگ کے دوران ریاست کی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کے حلقہ انتخاب اننت ناگ کے” سی ڈی فنڈ “پر سخت بحث و تکرار ہوئی۔ذرائع کے مطابق5 دن پہلے پی ڈی پی ورکران ضلع اسلام آباد( اننت ناگ) ریاست کی وزیر اعلیٰ اورممبر اسمبلی حلقہ اننت ناگ محبوبہ مفتی سے ان کی رہائش گاہ واقع سرینگر پر ملاقی ہوئے ،جہاں پر اننت ناگ کی صورت حال کے ساتھ ساتھ تعمیرو ترقی پر بات ہوئی۔ذرائع کا کہنا ہے اس میٹنگ میں محبوبہ مفتی نے ورکران سے کہا کہ اننت ناگ کی ترقی کے لئے میں نے سی ڈی ایف سے ابھی تک ایک کروڈ 50لاکھ سے زائد رقم واگزار کی ہے۔ذرائع نے بتایا کہ اسی رقم کے حوالے سے ضلع اننت ناگ میں ہو رہی میٹنگ میں ضلع صدر سے جواب طلبی کے لیے کہا گیا۔میٹنگ میں ضلع صدر جاوید احمد شیخ نے جب اس رقم کے بارے میں ورکران سے کہا کہ ابھی تک صرف 60 لاکھ کی رقم ہی سی ڈی ایف سے آئی ہے ۔اس پر میٹنگ میں موجود ورکران آگ بگولہ ہو گئے اور ضلع صدر سے کہا کہ 5 دن پہلے ہی محبوبہ مفتی نے کہا کہ ایک کروڑ کی رقم واگزار ہوئی ہے، تو باقی رقم کہاں گئی۔ میٹنگ موجود ورکران نے ایک دوسرے پر کرسیوں سے حملہ کیا اور ہاتھا پائی کے دوران صدر ضلع شیخ جاوید، زونل صدر جی اے ٹھوکر اور سبزاراحمد سمیت کئی ورکر زخمی ہوئے۔