انتظامی کونسل فیصلہ منسوخی کے حق میں جموں یونیورسٹی طلاب کا احتجاج

 جموں// جموں یونیورسٹی کے طلبانے آر ای ٹی اساتذہ کو ماسٹر گریڈ میں ترقی دینے کے ایس اے سی کے فیصلے کے خلاف احتجاج کیا۔مظاہرین نے جموں یونیورسٹی کے باہر سڑک پر مارچ کیا اور اس فیصلے کو منسوخ کرنے کا مطالبہ کیا جب انہیں پولیس دستوں نے روک دیا۔میڈیا سے بات کرتے ہوئے، انہوں نے کہا کہ ایس اے سی کا فیصلہ بلاجوازہے کیونکہ اس نے اساتذہ کی براہ راست بھرتی پر روک لگا دی ہے جس سے نوجوانوں کو ان کی اعلیٰ تعلیم، پوسٹ گریجویشن، اور براہ راست بھرتیوں کے باوجود اساتذہ اور ماسٹر بننے کے لیے پیشہ ورانہ تعلیم حاصل کرنے سے قاصر ہے۔مظاہرین نے کہا"ہم ReT اساتذہ کی ترقیوں کے خلاف نہیں ہیں لیکن ان کا کوٹہ 20 فیصد مقرر کیا جانا چاہیے اور حکومت کو جموں و کشمیر بھر میں اساتذہ کی براہ راست بھرتی کرنی چاہیے تاکہ نوجوانوں کو جموں و کشمیر حکومت کے محکمہ تعلیم میں تعلیمی شعبے میں ملازمت کے مواقع مل سکیں "۔ان کا کہنا تھا کہ حکومت اپنے ایس اے سی کے فیصلے کو واپس لے اور محکمہ تعلیم میں اساتذہ اور ماسٹرز کی خالی اسامیوں پر بے روزگار پڑھے لکھے نوجوانوں کی بھرتی کے لیے خالی اسامیوں کا اشتہار دے۔