امرناتھ یاترا کیلئے انتظامات مکمل ۔70طبی مراکز، 26آکسیجن بوتھ، 100ایمبولنس اورعملہ کے 1500افراد دستیاب

پرویز احمد
سرینگر // ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز کشمیر ڈاکٹر مشتاق احمد راتھر نے کہا ہے کہ محکمہ صحت نے یاترا کیلئے جواہر ٹنل سے چندواڑی تک 70طبی سہولیاتی مراکز کا قیام عمل میں لایا جارہا ہے، جس کیلئے طبی و نیم طبی عملہ کے 1500افراد دستیاب رہیگا، جبکہ100ایمبولنس گاڑیاں تعینات رہیں گی اور خصوصی 26آکسیجن بوتھ بھی قائم کئے گئے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ یاترا فراہم کرنے کیلئے عملہ کے 300افراد کو خصوصی تربیت دی گئی ہے۔ ڈاکٹر مشتاق نے ایک پریس کانفرنس میں بتایا کہ طبی انتظامات کو رواں برس مزید بہتر بنایا گیا ہے۔

 

انہوں نے کہا کہ جواہر ٹل سے گھپا تک کے دونوں راتوں بال تل اور چندواڑی تک 6اسپتال، 11میڈیکل اور12ایمرجنسی سینٹر کے علاوہ 26آکسیجن بوتھ قائم کئے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا ’’ دونوں راستوں پر 17عارضی طبی کیمپ بھی قائم کئے گئے ہیں جبکہ انتہائی نگہداشت والے 100ایمبولنس گاڑیوں کو تیاری کی صورت میں رکھا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آکسیجن بوتھوں کی تعداد 14سے بڑھاکر 26کردی گئی ہے۔ ڈائریکٹر نے کہا کہ امرناتھ راستے میں آنے والے علاقوں میں قائم اسپتالوں کو بھی تیاری کے حالت میں رہنے کی ہدایت دی گئی ہے جہاں 24گھنٹے عملہ دستیاب رہے گا۔انہوں نے کہا کہ لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا کی ہدایت پر بال تل اور چندواڑی میں 70بستروں والے 2ڈی آر ڈی او اسپتال قائم کئے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے پاس ہر دو کلومیٹر کے دائرے میں طبی سہولیات موجود ہیں اور اس کے علاوہ کسی بھی ایمرجنسی صورتحال سے نپٹنے کیلئے Movableٓٓ آکسیجن بوتھ اورایمرجنسی سسٹم کو دستیاب رکھا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یاترا کیلئے 1500طبی اور نیم طبی عملہ کو 3شفٹوں میں تعینات کیا جارہا ہے اور تمام افراد کیلئے رہائشی سہولیات بھی فراہم رکھی جارہی ہیں۔

 

ان کا کہنا تھا کہ آئیسولیشن سہولیات بھی ہر جگہ دستیاب رکھی گئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بیرون ریاستوں سے آئے ماہر ڈاکٹر بھی یاترا کے دوران خدمات انجام دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ صحت نے ریجنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ اینڈ فیملی ویلفیئر میں 300ڈاکٹروں اور نیم طبی عملہ کو خصوصی تربیت فراہم کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ عالمی وباء کی صورتحال پر نظر رکھے ہوئے ہیں اور اس حوالے سے اعلیٰ حکام سے بات کرنے کے بعد ہی کوئی حتمی فیصلہ لیا جائے گا۔