امرسنگھ کالج سے اساتذہ اور طلبہ کی ٹیکہ کاری مہم کا آغاز

سرینگر //وادی کے مختلف کالجوں میں کام کرنے والے تدریسی و غیر تدریسی عملہ اور زیر تعلیم طلبہ کیلئے بدھ سے شروع کی گئی خصوصی ٹیکہ کاری مہم کے پہلے دن وادی کے مختلف کالجوں میں کام کرنے والے تدریسی و غیر تدریسی عملہ اور طلبہ سمیت 266افراد کو کورونا مخالف ٹیکے لگائے گئے ۔اس خصوصی مہم کا افتتاح بدھ کو ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز کشمیر ڈاکٹر مشتاق احمد راتھر نے کیا جبکہ خصوصی کیمپ کی نگرانی زونل میڈیکل آفیسر بٹہ مالو ڈاکٹر سمینہ کررہی تھی۔ خصوصی کیمپ کے افتتاح کے دوران ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز نے امرسنگھ کالج میں تعینات اساتذہ اور وہاں تعینات طبی عملہ سے بات چیت کی۔ افتتاحی تقریب کے دوران ڈائریکٹر ہیلتھ سروسز کشمیر ڈاکٹر مشتاق راتھر نے کہا کہ کورونا وائرس سے لڑنے کیلئے ٹیکہ کاری اورکورونا مخالف ایس او پیز پر عمل کرنا ، دو انہتائی اہم ہتھیار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ان کیمپوں کا انعقاد وادی کے ہر اضلاع میں ہوگا اور ہماری کوشش ہے کہ سرکاری کی جانب سے سکول اور کالج کھولنے سے قبل زیادہ تر بچوں اور اساتذہ کو کورونا مخالف ٹیکہ لگایا جائے۔ خصوصی کیمپ کے دوران 134افراد کو دوسرا ڈوز جبکہ 132افراد کو ویکسین کا پہلا ڈوز لگایا گیا ہے۔ ویکسین لینے والے 266افراد میں 260کو Covisheild جبکہ 6کو Covaxinلگایا گیا ہے۔
 
 

گاندربل میں مثبت معاملات کی شرح 1فیصد سے کم 

گاندربل//ڈپٹی کمشنر گاندر بل کریتکا جیوتسنا نے کہا کہ ضلع میں مجموعی طور پر مثبت معاملات میں بڑے پیمانے پر کمی دیکھنے میں آئی ہے اور اس وقت مثبت معاملات کی شرح محض 0.79 فیصد ہے ۔ انہوں نے عداد و شماربتاتے ہوئے کہا کہ اس ہفتے تقریباً 13000 ٹیسٹ ہوئے ہیں اور مجموعی طور  پر مثبت معاملات کی شرح 0.79 فیصد پر آ گئی ہے جو گذشتہ ہفتہ میں1.5   فیصد تھی ۔ انہوں نے بتایا کہ گذشتہ ہفتے کووڈ کئیر سنٹرز میں 7000 ٹیسٹ کئے گئے تھے اور صرف 11 افراد کا مثبت تجزیہ کیا گیا تھا جنہیں ہوم اسولیشن میں رکھا گیا تھا اور وہ تمام مستحکم ہیں ۔ فعال مثبت معاملات کے بارے میں ڈی سی نے بتایا کہ اس وقت ضلع میں 176 معاملات سرگرم ہیں جبکہ ضلع میں اب بھی 41 کنٹین منٹ زون قائم ہیں ۔